جامعہ رحمانی مونگیر: تقریر ی وتحریری مسابقہ کادوسرا دور جاری

مونگیر:24؍دسمبر 2017:جامعہ رحمانی مونگیر میں تقریر وتحریر کا مسابقہ جاری ہے، پہلے مرحلہ کا مسابقہ ختم ہوگیا، جس میں پچھلے سال کے انعام یافتہ ۳۱؍ طلبہ نے شرکت کی اور (۱) بعثت نبویؐ کا مقصد (۲) اسلامی شریعت اور اس میں بڑھتی مداخلت ہمارے لیے لمحہ فکریہ کے موضوع پر تقریریں کیں، مسابقہ کا دوسرا مرحلہ غیر انعام یافتہ طلبہ کے درمیان جاری ہے، اور اب تک (۱) غصہ ایک مہلک بیماری (۲) حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا بچپن (۳) رشتہ داروں کے ساتھ حسن سلوک (۴) فتنہ ارتداد کا نیاروپ شکیل بن حنیف کے موضوع پر ۷۶؍ طلبہ کی تقریریں ہوچکی ہیں، ابھی دو عنوان ہندوستان کی تعمیر وترقی میں مسلم حکمرانوںکا کردار اور راستہ کے آداب وحقوق پر تقریریں ہونی باقی ہیں، جو جمعرات کوہوگا، اس کے علاوہ معجزات نبوی صلی اللہ علیہ وسلم اور مفکراسلام حضرت مولانا محمد ولی صاحب رحمانی بحیثیت جنرل سکریٹری بورڈ اور امیر شریعت کے عنوانات پر بیش قیمتی مقالے بھی پیش کیے جائیںگے۔اس موقعہ پر حکم کے فرائض جامعہ رحمانی کے اساتذہ مولانا مفتی ریاض احمد قاسمی، مولاناجمیل احمد مظاہری، مولانامحمد خالد رحمانی، مولانامحمدکبیر الدین رحمانی، مولانامفتی مبارک حسین قاسمی، مولانا محمد احمد مظاہری، مولانامفتی معین کوثر قاسمی، مولانامفتی جاوید اقبال قاسمی اورمولاناانظر حسین قاسمی نے انجام دیئے۔جامعہ رحمانی میں طلبہ میں تقریر وتحریر کی صلاحیت ابھارنے کے لیے انجمن نادیۃ الادب قائم ہے، جس کے تحت طلبہ کو ہفتہ وار تقریر کی مشق کرائی جاتی ہے، دو بار مسابقہ ہوتا ہے، اس کے علاوہ ایک بار تقریر کا ایسا مسابقہ ہوتا ہے، جس میں عنوان طلبہ کو دو منٹ پہلے بتایا جاتا ہے، پختہ کاراہل قلم بنانے کے لیے دیواری پرچہ الجامعہ کی اشاعت کا سلسلہ بھی قائم ہے، اور مقالہ نویسی کا مسابقہ بھی ہوتا ہے۔جامعہ رحمانی مونگیر کے سرپرست مفکراسلام حضرت مولانا محمد ولی صاحب رحمانی کی خواہش ہے کہ طلبہ میں کمپٹیشن کا مزاج بنے، اور وہ ہمہ جہت صلاحیت کے مالک ہوں، اس لیے مقابلہ کی نوعیت میں ان کی ہدایت پر تبدیلی آتی رہتی ہے، اور طلبہ کی حوصلہ افزائی کے لیے قیمتی انعامات دیئے جاتے ہیں، انجمن کے صدر جناب مولانامحمدنعیم صاحب رحمانی نے یہ بتاتے ہوئے کہا کہ طلبہ کی بہت بڑی تعدادنے مسابقہ میں شرکت کی ہے، جو خوشی کی بات ہے، لیکن یہ قابل اطمینان نہیں ہے، یہ تعداد اور بڑھنی چاہیے۔ آپ کے سرپرست کی خواہش ہے کہ آپ میںکاہر کوئی بڑی صلاحیتوںکے ساتھ میدان عمل میں جائے۔