جالے نے ہندو مسلم اتحاد کا عظیم علمبردار کھو دیا ۔۔۔۔۔عبد الباری صدیقی سعید الرحمان کے انتقال سے پورا جالے حلقہ ہوا سوگوار۔۔۔۔۔۔۔

( جالے ۔5/ دسمبر )
                جالے کی عظیم سیاسی وسماجی ہستی اور ہندو مسلم اتحاد کے با اثر علمبردار سعید الرحمان کی رحلت سے پورے علاقے میں جہاں سوگ کی لہر دوڑ گئی ہے وہیں مقامی بلاک کے مختلف سیاسی سماجی وملی رہنماوں نے ان کی وفات پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے ان کے اچانک چلے جانے کو پورے علاقے کا بڑا خسارہ قرار دیا ہے اور کہا ہے موصوف کے جانے کا غم برسوں تک یہاں کے لوگوں کو ستاتا رہے گا کیونکہ موصوف نہ صرف ایک علم دوست،سماجی خدمتگار اور جالے کی تہذیبی روایت کے پاسدار تھے بلکہ انہوں نے اپنی سیاسی بصیرت سے جس طرح پورے علاقے میں مسلمانوں کی سیاسی پوزیشن کو مستحکم بنائے رکھنے کی کوشش کی اس کی کوئی دوسری مثال نہیں ملتی ان کا سب سے اہم کارنامہ یہ رہا کہ انہوں نے حضرت قاضی محاہد الاسلام قاسمی علیہ الرحمہ اور خواجہ جابر حسین کے قدم سے قدم ملاکر اس پورے علاقے میں دینی وعصری تعلیم کے مشن کو آگے بڑھا کر نئی نسل کے شاندار تعلیمی مستقبل کی راہ آسان بنائی ان کے دل میں غریبوں کا درد اور ان کے مفادات کے تحفظ کے تئیں خاص تڑپ تھی وہ اپنی پوری زندگی عوام کے لئے جیتے اور ان کی فکر کرتے رہے اور اپنے اس عمل میں مذہب یا ذات کو کبھی حائل ہونے نہیں دیا اور سب سے بڑی بات یہ تھی کہ وہ قوم پرست کے ساتھ ہندو مسلم اتحاد کے بھی بڑے مضبوط علمبردار تھے یہی وجہ ہے کہ اس علاقے کا ہر طبقہ یکساں طور پر آپ سے محبت کرتا تھا موصوف کی رحلت کے بعد تعزیت اہل خانہ سے تعزیت کے لئے جالے پہنچے آر جے ڈی کے عظیم لیڈر عبد الباری صدیقی نے کہا کہ سعید الرحمان کی شکل میں ہم نے اپنا ایک ایسا رہنما کھودیا ہے جن کی فکر کافی وسیع اور متحرک تھی انہوں نے جالے کی سرکردہ شخصیات سے ملاقات کرتے ہوئے کہا کہ ایسے لوگ بہت کم پیدا ہوتے ہیں میں نے ان کے اندر جو سیاسی شعور دیکھا ہے اس کی روشنی میں کہ سکتا ہوں کہ وہ اپنی قوم کے ساتھ پورے سماج کو آپس میں جوڑ کر رکھنے کا حوصلہ رکھتے تھے اس لئے ان کی جدائی پر ہم سب کا ایک ساتھ رنجیدہ ہونا فطری بات ہے انہوں نے کہا کہ یہ جالے کی خوش نصیبی تھی کہ یہاں سعید الرحمان جیسے لوگ بستے تھے جن سے نہ جانے کتنے لوگ اپنی منزل کا پتہ پوچھتے تھے صدیقی نے کہا کہ دنیا میں یوں تو ہر کوئی جانے کے لئے ہی آیا ہے مگر بعض لوگ اپنے کاموں اور خدمات کے سبب اتنے عظیم ہوجاتے ہیں کہ ان کی رحلت ہر کسی کو آبدیدہ کر دیتا ہے پیام انسانیت ٹرسٹ کے جنرل سکریٹری اور جالے جامع مسجد کے امام وخطیب مولانا مظفر احسن رحمانی نے کہا کہ سعید الرحمان جالے سے تعلق رکھنے والے ان لوگوں میں سے ایک تھے جو جانے کے بعد بھی اپنے مثالی کارناموں اور اہم خدمات کے سبب لوگوں کے دلوں میں ہمیشہ زندہ رہیں گے انہوں نے کہا کہ جو اپنی زندگی میں غریبوں اور سماج کے پسماندہ لوگوں کے لئے کچھ کرتے رہنے کو اپنی زندگی کا مقصد بنایا ہوا ہوتا ہے وہ مرنے کے بعد بھی لوگوں کے دلوں میں زندہ رہتے ہیں دارالعلوم سبیل الفلاح جالے کے ناظم تعلیمات مولانا مفتی عامر مظہری نے اپنے ایک تعزیتی پیغام میں کہا کہ سعید الرحمان جیسے لوگ سماج کے لئے چراغ کی حیثیت رکھتے ہیں جن سے لوگ راہنمائی حاصل کرتے ہیں اس لئے میں سمجھتا ہوں کہ ان کے جانے سے سماج میں جو خلا پیدا ہوا ہے اس کی بھر پائی بہت مشکل سے ہو پائے گی جالے کے اہم تاجر وسماجی کارکن گلریز خاں نے کہا کہ میں اور میرے گھر کے افراد ان کے جانے سے کافی دکھی ہیں انہوں نے کہا کہ دنیا میں یوں تو بہت لوگ جیتے ہیں مگر اصل آدمی وہ ہوتا ہے جو دوسروں کی خوشی کے لئے اپنی زندگی وقف کردے میں سمجھتا ہوں کہ سعید الرحمان صاحب ان ہی لوگوں میں سے ایک تھے اہم کانگریسی لیڈر صادق آرزو نے کہا کہ سعید الرحمان کی پوری زندگی عزم کی تصویر تھی وہ مسلمانوں کے سیاسی مفادات کے تحفظ کے لئے جو منصوبہ بناتے ان کو انجام تک پہونچانے کے لئے اپنی ساری توانائیاں صرف کر دیتے انہوں نے نہ تو زندگی میں کبھی حوصلہ ہارا اور نہ ہی تھک ہار کر بیٹھ جانے کو پسند کیا انہوں نے کہا کہ وہ گہری سیاسی بصیرت اور عوامی خدمت کا جذبہ رکھتے تھے یہی وجہ تھی کہ ہر خاص وعام میں ان کی قدر تھی سرگرم سیاسی وسماجی لیڈر عامر اقبال نے موصوف کی رحلت پر نہ صرف بے حد صدمے کا اظہار کیا بلکہ انہوں نے کہا کہ جن لوگوں نے سعید الرحمان کی زندگی اور ان کے مختلف کارناموں کو اپنی آنکھوں سے دیکھا ہے ان کے لئے انہیں بھلا پانا آسان نہیں ہوگا انہوں نے کہا کہ وہ جالے کے لوگوں کی آبرو اور ان کا وقار تھے اس لئے مجھے یہ یقین ہے کہ وہ ہمیشہ یہاں کے لوگوں کے دلوں میں زندہ رہیں گے انہوں نے کہا کہ میں ان کے اہل خانہ کے غم میں برابر کا شریک ہوں اور ان کے لئے دعا کرتا ہوں انہوں نے کہا کہ میں پر امید ہوں کہ ان کے اہل خانہ ان کی کمی کو دور کرنے کی عملی کوشش کریں گے تاکہ سماج میں ان کی یادوں کو تازگی ملتی رہے ان سب کے علاوہ پیام انسانیت ٹرسٹ کے صدر مولانا محمد ارشد فیضی قاسمی۔خواجہ جابر حسین۔مشہور سیاسی لیڈر طفیل احمد ۔بی جے پی کے رہنما رام نواس پرشاد، شانتکا نندن ورما، جالے ہائی اسکول کے پرنسپل برندر کمار دھیر، راجد اقلیتی سیل کے صدر ولی امام عرف چمچم، ضلع پارشد کے پتی نریش چودھری، پروفیسر بدر عالم،پروفیسر یاسر سجاد، سعید عالم العالم، مولانا صفات احمد۔سمیت مختلف شخصیات نے اظہار تعزیت کیا ہے ۔
Attachments area