عالمی امن اور حضورِؐکی تعلیمات کے موضوع پرجشنِ عید میلادالنّبیؐ کے تحت اسلامیہ ڈگری کالج میں تقریری ونعت خوانی مقابلہ

سہارنپور۲۶نومبر(احمد رضا) آج یہاں اسلامیہ ڈگری کالج میں ایجوکیشنل لیگ آف مسلمس ان انڈیا کے زیرِ اہتمام جشنِ عید میلادالنّبیؐ کے تحت اسکول کالجوں کے طلبہ وطالبات کا تقریری اور نعت خوانی کا مقابلہ کرایا گیا جسمیں اسلامیہ انٹر کالج ، مسلم گرلز انٹر کا لج ،گرو نانک گرلز انٹر کالج سر سیّد میموریل ہائی اسکول کے علاوہ انگلش میڈیم اسکولوں میں صوفیہ انگلش میڈیم گرلز اسکول،براؤن ووڈ پبلک اسکول اور ایلپائن پبلک اسکول کے50کے قریب طلبہ وطالبات نے تقریری و نعت خوانی کے مقابلہ میں حصّہ لیا ۔ہائی اسکول کے طلبہ وطالبات نے حضورؐ کی تعلیمات اور والدین کی خدمت اور انٹرمیڈیٹ کے طلبہ وطالبات نے حضورؐ کی تعلیمات اور امنِ عالم کے موضوعات پراظہارِخیال کیا ۔صدارت اسلامیہ ڈگری کالج کے کنٹرولر پروفیسراختر علیخاں نے اور نظامت ڈاکٹر شاہد زبیری نے کی۔
جامعہ مظاہر علوم کے مولانا عبداللہ خالد ،جامعہ مظاہر علوم کے مولانا اسعد حقّانی ندوی، المعہدالاسلامی مانکمؤ کے مولانا انعام اللہ قاسمی،ہندو گرلز انٹر کالج کی پرنسپل ڈاکٹر قدسیہ انجم،اسلامیہ ڈگری کالج کے ڈاکٹر ضیغم عبّاس زیدی اور کالج کی منتظمہ کمیٹی کے صدر پروفیسرفیّاض انصاری جج بنائے گئے تھے ۔ا س موقعہ پر پروگرام کے کنوینر اور ایجو کیشنل لیگ کے قومی چئیر مین حافظ عارف عثمانی علیگ نے بتا یا کہ نتائج اور انعامات کا اعلان ماہ دسمبر کے دوسرے ہفتہ میں سیرتؐ کے پروگرام یں کیا جا ئیگا انہوں نے کہا کہ پروگرام کا مقصد طلبہ وطالبات کو حضورؐ کی ذاتِ مبارکہ اور انکی تعلیمات سے روشناس کرانا ہے انہوں نے کہا کہ پیغمبرِاسلامؐکسی خاص طبقہ ،خاص خطّہ یا کسی خاص زمانہ کیلئے دنیا میں نہیں بھیجے گئے تھے انہوں نے کہا کہ آپ ؐاللہ کے آخری نبی ہیں اور کل عالم کے اور ہر زمانہ کے نبیؐ ہیں جو دنیا کو جہالت کی تاریکیوں سے نکالنے علم کیطرف لیجانے اور دنیا کو امن کا گہوارہ بنانے کیلئے تشریف لائے تھے۔پروفیسر فیّاض انصارینے کہا کہ حضورِ اکرمؐکی تعلیمات پر چل کر ہی دنیا میں امن وآشتی قائم ہوسکتی ہے ،پروفیسر اختر علیخاں نے کہا کہ حضور رہتی دنیا تک انسانیت کیلئے ایک رول ماڈل ہیں ، مولانا انعام اللہ قاسمی نے حضور ؐکی سنّتوں کا احیاء کرنے اور آپؐ کی تعلیمات پر عمل کرنے پر زور دیا۔ پروفیسر ڈاکٹر ذیغم عبّاس زیدی،مولانا عبداللہ خالد خیر ا بادی، مولانا اسعد حقانی ندوی اور ڈاکٹر قدسیہ انجم نے بھی حجور کی سیرتؐ پر طلبہ وطالبات سے خطاب کیا ۔