ممبئی دہشت گردانہ حملے کے ماسٹرمائنڈحافظ سعید کی رہائی دہشت گردوں کو مین اسٹریم میں لانے کی پاکستانی کوشش:بھارت

نئی دہلی، 23 نومبر:بھارت نے ممبئی دہشت گردانہ حملے کے ماسٹرمائنڈحافظ سعید کی رہائی سے متعلق خبر پر برہمی کا اظہار کیا ہے وہیں اس قدم کو اقوام متحدہ نے دہشت گردوں کو قومی دھارے سے جوڑنے کی پاکستانی کوشش قراردی ہے ۔ اس خبر پر سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے بھارتی وزارت خارجہ نے کہا کہ حافظ سعید کو رہا کیا جانا دہشت گردوں کو عدالتی کے کٹہرے میں کھڑا کرنے کی سمت میں پاکستان کی’’ سنجیدگی میں فقدان‘‘ اور ان کے تئیں نرمی کو ظاہر کرتا ہے ۔ وزارت خارجہ کے ترجمان رو یش کمار نے نامہ نگاروں سے کہاکہ ایسالگتا ہے کہ پاکستانی نظام دہشت گردوں کو مرکزی دھارے میں لانے کی کوشش کر رہا ہے ۔ یہ واضح ہے کہ پاکستان نے حکومت سے الگ عناصر کو تحفظ اور حمایت دینے کی پالیسی میں کوئی واضح تبدیلی نہیں ہوئی ہے اور اب اس کا اصلی چہرہ ہم سب کے سامنے ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت سمیت تمام بین الاقوامی برادری اس بات سے مشتعل ہے کہ ایک خود قابل قبول اور اقوام متحدہ کا اعلان دہشت گرد کو اس کے ایجنڈے کو جاری رکھنے اور علی الاعلان اس پر عمل کرنے کی اجازت دے دی گئی۔حافظ سعید کو 26-11 ممبئی دہشت گردانہ حملے کاماسٹر مائنڈ قرار دیتے ہوئے کمار نے کہا کہ محدود دہشت گرد تنظیم جماعت الدعوی کے لیڈر نے پاکستان کے ہمسایہ ممالک کے خلاف انہوں نے دہشت گردانہ حملوں کو انجام دیاتھا ، وہ ممبئی حملے کا سازشی ہی نہیں؛ بلکہ اس حملہ کا ماسٹر مائنڈ بھی تھا ۔ انہوں نے کہا کہ اس کی رہائی سے دہشت گردانہ کارروائیوں کو انجام دینے وا لے ایسے افراد کو نصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنے کے تئیں پاکستانی حکومت کے سنجیدگی میں فقدان کی عکاسی کرتا ہے۔کمار نے کہا کہ یہ پاکستان حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنی بین الاقوامی ذمہ داری کو پورا کرے اورحافظ سعید جیسے مطلوبہ دہشت گردوں کے خلاف قابل اعتماد مؤثر کارروائی کرے۔ قابل ذکر ہے کہ حافظ سعید کو جلد ہی رہا کر دیا گا کیونکہ پاکستان کی ایک عدلیہ نے اسے حراست سے رہا کرنے کا حکم دیا ہے۔ حافظ سعید کی رہائی 2008 میں ممبئی پر دہشت گردانہ حملے کے ماسٹر مائنڈکو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرنے کی بھارت کی کوششوں کو دھچکا لگا ہے ۔ تنظیم جماعت الدعوی کے سربراہ پر امریکہ نے ایک کروڑ ڈالر کا انعام کا اعلان کر رکھا ہے اور وہ اس سال جنوری سے حراست میں ہے۔ایک اور سوال کے جواب میں کمار نے کہا کہ بھارت نے کلبھوش جادھو کی بیوی کے پاکستان سفر کرنے کی پوزیشن میں ان کی حفاظت کی ضمانت دینے کا مطالبہ اور شرط رکھی ہے ۔ قابل ذکر ہے کہ رواں ماہ پاکستان نے موت کی سزا پائے بھارتی شہری جادھو کی بیوی کو ان سے ملنے کی اجازت دی تھی۔ بھارت نے پاکستان سے انسانی بنیاد پر جادھو کی ماں کو ویزا فراہم کرنے کی مانگ کی تھی جسے پاکستان نے قبول کر لیا ہے۔