قومی مفاد میں مسلم ووٹوں کی تقسیم روکنا ہمارا فرض!اوصاف گڈو

سہارنپور (احمد رضا) مٹھی بھر مفاد پرست افراد ہماریآپسی تکرار سے فائدہ اٹھاکر آج تک ہمارے ووٹ کو بانٹتی آئی ہیں مگر آج نئی نسل اپنے سنہرے مستقبل کی جانب کامزن ہے نئی نسل ووٹ کے بکھراؤ کو روکنا چاہتی ہے اسلئے آپ کی یہ پہلی ذمہ داری ہے کہ آپ صوبائی سطح پر ہونے جارہے بلدیاتی چناؤ میں مسلم ووٹ کی تقسیم روکیں اور سیکولر صاف ذہن صاف کردار امیدوار ہی کوہی ووٹ دیں گزشتہ پندرہ سالوں بعد یہاں ہونیوالا یہ بلدیاتی چناؤ ملک کا مستقبل طے کرنے جار ہاہے اگر ہم اپنے ووٹ کی طاقت کا مظاہرہ یکجہتی کے ساتھ کر پائے تو ہمارا وجود مزید مستحکم ہوجائیگا اور اگر جذباتی ہوکر اپنا ووٹ بانٹ بیٹھے تو پھر آپ نتیجہ نکال سکتے ہیں کہ قوم کا حشر آگے کیا ہوگا؟ آج اللہ نے یہ سنہرا موقع ہمیں گاؤں در گاؤں اور محلہ در محلہ تڑپتی اور پست ہوتی جارہی قوم کو اندھیرے سے باہر نکالنے کا عطا کیاہے ہمیں اللہ کا شکر ادا کرتے ہوئے قومی مفاد کیلئے ووٹ دیناہے!
بہوجن سماج پارٹی کئے نوجوان قائد اوصاف قریشی عرف گڈو نے آج یہاں مقامی بازداران علاقہ کی اہم میٹنگ میں ان اہم خیا لات کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ اس موقع پر بعدآج ہم یہ عہید کریں کہ فرقہ پرستوں ، موقع پرستوں اور قوم کو بانٹنیوالی مقامی سطح کی اوچھی قیادت کو ناکام کرنیکے لئے اپنے ووٹ کی اہمیت برقرار رکھیں اور بہوجن سماج پارٹی کے میئر سیٹ سے امیدوار حاجی فضل الرحمان کوبھاری ووٹ سے جتائیں تاکہ نگم کے گھوٹالوں اور مسلم علاقوں سے کئے جانیوالے نگم افسران کے حاسدانہ برتاؤ پر لگام لگائی جاسکے! بہوجن سماج پارٹی سرگرم نوجوان قائد بھائی گڈڈو قریشی نے شہر کے مختلف درجن بھر علاقوں میں عوامی رابطہ کے دوران زور دیکر کہاکہ آج ریاست میں دوغلی پالیسی اور شاطرانہ نظریہ کے سبب ہی عوام کا استحصال کیا جارہاہے بیقصور افراد کو بلا وجہ تنگ وپریشان کیا جارہاہے مسلم طبقہ پر زیادہ مصیبتیں لاد دیگئی ہیں اقلیتی طبقہ بہت سی مشکلات سے دوچار ہے اب سبھی سیاسی جماعتوں سے امن پسند عوام کا اعتماد قطعی طورپر اٹھ چکا ہے مسلم قوم کی بہتری اور ترقی سے ان سبھی جماعتوں کو کچھ بھی سروکار نہ کبھی تھا اور نہ آج ہے ہماری قوم کو صرف بہلایا اور رجھایاجاتاہے حقوق سے دور رکھاجانا انکی سازش کا ہی اہم حصہ ہے؟ بھائی گڈڈو نیکہاکہ قوم کے زیشعور لوگ آجکل کے تنگ حالات دیکھ کر دھیرے دھیرے اب سبھی جماعتوں سے دو ر ہو تے ہوئے بہوجن سماج پارٹی کی جانب تیزی سے بڑھنے لگے ہیں ! بہن مایاوتی کے ہاتھوں کوطاقت پہنچانیکیلئے بسپا کی سپر کمان نے یہاں شہری نگم کی میئر سیٹ پر ملک کے نامی گرامی ایکسپورٹر حاجی فضل الرحمان کو اپنا میئر امیدوار بناکر انکو ہاتھی کا سمبل الاٹ کیاہے ! کانگریس، سماجوادی پارٹی کے امیدواروں کو حاشیہ پر ڈال دیاہے وہیں نگر نگم کی میئر سیٹ کو فرقہ پرستی کے بوتے جیت کا خواب دیکھنے والی بھاجپاکو بھی حیرت میں ڈال دیاہے !شہرکے سو سے زائد علاقوں میں بہوجن سماج پارٹی کی پبلک ریلیوں میں مسلم فرقہ کی بھاری بھیڑ بسپاکی بڑھتی طاقت کی ضامن ہے میئر سیٹ کے طاقتور دعوے دار حاجی فضل الرحمان بہوجن سماج پارٹی کی بھائی چارہ کمیٹی کی ریلیوں میں بھاری بھیڑ کو خطاب کرتے ہوئے بڑی بیباکی کے ساتھ کہ رہے ہیں کہ ہم سبھی لوگ ضلع میں مل جل کر رہتے ہیں مگر موقع پرست اور ووٹ کے سوداگر ہمیں آپس میں لڑاکر ووٹ لینا چاہتے ہیں جو اب نہی ہوگا ہم سبھی مل جل کر ایک جگہ قائم رہکر ضلع کی بہتری کیلئے ہی اپنے ووٹ کا سہی استعمال کریں گے ! علیگڑھ سے گریجوئیٹ سوشل رہبر اور نامور تاجر حاجی فضل الرحمان کا سیدھا کہناہیکہ یہاں ہمیشہ سے دنگے ایک سوچی سمجھی اسکیم کے تحت ہی رونما ہوتے رہے ہیں دنگے اچانک نہی ہوتے دنگے کرائے جاتے ہیں عام رائے یہ بھی ہیکہ ہندو مسلم لڑتے نہی بلکہ سیاست داں انکو اپنے مفاد کیلئے لڑاتے ہیں!بہوجن سماج پارٹی قائدنے بیباک انداز میں کہاکہ بسپا کی سرکار آجانیکے بعد مسلم طبقہ کو آبادی کے لحاظ سے سرکاری اداروں میں حصہ داری دینے کا وعدہ ہر صورت پوراکیا جائیگا !
اوصاف گڈو نے کہاکہ مفاد پرست ذمہ دار اب کھلے عام ملک کے مسلمانوں، مساجدوں کے امامو ں، مدارس کے اسٹاف اور طلبہ کو تو شک وشبہات سے دیکھتے ہی رہی ہیں اس سے بھی آگے بڑھ کر آج پورے ملک میں مسلم فرقہ کو جس طرح سے اپنی سڑی گلی ذہنیت کا نشانہ بنایا جارہاہے وہ کسی طرح سے ملک کے مفاد میں نہی ہے پورے ملک میں نبیﷺ کی شان میں نازیبا جملہ ادا کرنے والا ملعون کملیش تیواری ہمارے ریاستی اقتدار کی بدولت بہ آسانی جیل سے باہر آگیا ویسے جیل میں بھی اس ملعون کملیش تیواری کو سماجوادی پارٹی کی سرکارانے فرسٹ کلاس سہولیات فراہم کی تھیں آ ج وہ پھر مسلم ووٹ حاصل کرنا چاہتی ہے، مزے دار اور دل کو دکھ دینے والی بات یہ ہے کہ اکھلیش یادو کی سرکار میں رسول ﷺ کی شان میں گستاخی کئے جانیکا ظالم قصور وار کملیش تیواری جس بیان اور تحریر کی بنیاد پر نبی ﷺ کی شان میں نازیبا جملہ ادا کرنیکا ملزم قرار دیاگیاتھا وہ اسکے بیان کی اصل تحریر ہی پولیس کے قبضہ سے ندارد کرادیگئی مکمل طور سے نیست و نابود کرادیگئی اور کملیش تیواری سماجوادی سرکار میں با عزت باہر آگیا نبی کی شان کا ناقابل معافی مجرم سیاسی اثر ورثوخ کے رہتے اتنا بڑا جرم کرنیکے بعد بھی آزاد گھوم رہاہے جبکہ مقامی سطح پر بیقصور مسلم اور دلت نوجوانوں کو ناحق ہی ملزم بناکر گزشتہ کئی ماہ سے جیلوں میں ڈال رکھاہے آج وقت ہے اس سوچ کو بدلنیکا آؤ عہد کریں کہ فتح کے قریب بسپا امیدوار کو ہی ووٹ دیکر بڑی اکثریت سے جتائیں اور موقع پرستوں کو پچھاڑیں ؟ بسپا قائد حاجی فضل الرحمان کی تیس سالہ قومی خدمات کی بابت اور اپنے اکا برین کی خصوصیات پر روشنی ڈالتے ہوئے گڈو بھائی نیکہاکہ گزشتہ ۱۲۵ سالوں سے ملک کا ایک خاص طبقہ ہمارے وجود کو مٹانے کے لئے کمر بستہ ہے مسلمان کے ذریعہ اپنے وطن عزیز کی خاطر آن ریکارڈ لاکھ قر بانیاں دینے کے بعد بھی اپنے اس ملک میں ہمیں اور ہماری نئی نسل کو شک کے دائرہ میں لاکر تنگ و پریشان کیا جارہاہے اور چند مفاد پرستوں نے ہما ووٹ لیکر اقتدار تو پالیا مگر ہمیں سازش کے تحت سرکاری مراعات سے محروم کرتے ہوئے غلامی کی زندگی بسر کرنے پر مجبورکر رہے ہیں ہمیں ان مفاد پرست طاقتوں سے ہوشیار رہکر اپنے ووٹ کا سہی استعمال کرناہے ! فوٹو۔ نمبر ۱ بہوجن سماج پارٹی میئر امیدوار ضلع کے بسپا قائدین کے ہمراہ پریس سے روبرو ہوتے ہوئے!