سوئٹزرلینڈ کے جوڑے پر حملے کی خبر پر سشما سوراج نے مانگی اتر پردیش کی حکومت سے معلومات مرکزی وزیر ثقافت مہیش شرما نے کہا نے ہندو ستان کے لئے شرم کی بات ہے

نئی دہلی، 26 اکتوبر :وزیر خارجہ سشما سوراج نے اتوار کو فتح پور سیکری میں نوجوانوں کے گروپ کی طرف سے سوئٹزرلینڈ کے ایک نوجوان کے پریمی جوڑے پر حملہ کرنے کی خبر پر اتر پردیش کی حکومت سے آج معلومات مانگی۔سشما نے یہ بھی کہا کہ ان کا دفتر پریمی جوڑے سے ملے گا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ مجھے ابھی اس بارے میں پتہ چلا۔ میں نے ریاستی حکومت سے رپورٹ مانگی ہے۔ میرے افسر اسپتال میں ان سے ملیں گے۔خبر کے مطابق فتح پور سیکری میں نوجوانوں کے گروپ نے سوئٹزرلینڈ کے ایک پریمی جوڑے کا پیچھا کیا اور پتھروں اور لاٹھیوں سے ان پر حملہ کیا جس سے دونوں زخمی ہو گئے۔کوئنتن جیریمی کلیرک (24) اپنی گرل فرینڈ مریم دروج (24) کے ساتھ 30 ستمبر کو ہندوستان آیا تھا۔ کلیرک کے حوالے سے بتایا گیا کہ وہ اپنی گرل فرینڈ کے ساتھ آگرہ میں گھومنے کے بعد فتح پور سیکری میں ریلوے اسٹیشن کے قریب گھوم رہا تھا تبھی گروپ نے ان کا پیچھا کرنا شروع کر دیا اور بعد میں ان پر حملہ کیا۔ذرائع کے مطابق کہ وہ زمین پر زخمی اور خون سے بھیگے پڑے تھے اور وہاں کھڑے لوگ اپنے موبائل فون سے ان کا ویڈیو بنا رہے تھے۔ وہی مرکزی وزیر ثقافت مہیش شرما نے نوجوانوں کے ایک گروپ کی طرف سوئس جوڑے پر حملے کی آج مذمت کی اور انہوں نے کہا کہ یہ ہندوستان کے لئے شرم کی بات ہے۔وزیر نے کہا کہ یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ ایسا واقعہ ملک میں ہوا۔ شرما نے کہاکہ مجھے لگتا ہے کہ وزیر خارجہ نے اس پر رائے دی ہے۔ یہ قانون اور نظام کا معاملہ ہے لیکن وزیر ثقافت اور انسان ہونے کے ناطے غیر ملکی سیاحوں پر حملے کی مذمت کرتا ہوں۔ یہ بدقسمتی کی بات ہے، ایسا نہیں ہونا چاہئے۔یہ ہمارے لئے شرم کی بات ہے۔