آر ایس ایس مختلف مشاورتی گروپ کے ساتھ20مباحثہ پروگرام کا انعقاد کرے گی

نئی دہلی 22 اکتوبر:آر ایس ایس نے مختلف طبقوں اور گروپوں کے مفکرین او رماہرین کے ساتھ بحث کرنے کے لئے آنے والے دنوں میں 20 اجلاس کا خاکہ تیار کیا ہے ۔ اس کے علاوہ سنگھ کی جانب سے کسانوں، اقتصادی پالیسیوں، دلت آدی باسیوں کے مسائل سمیت 10 نکات پر اپنے مشن کو آگے بڑھائے گا ۔ سنگھ کے ایک سینئر عہدیدار نے کہا کہ اس سمت میں کچھ وقت پہلے آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت نے دہلی میں ایک میٹنگ کی تھی جس میں کئی ممالک کے سفارت کاروں کے ساتھ گفتگو کی تھی ۔ وجے دشمی کے بعد سے سنگھ کی اعلیٰ قیادت نے مختلف طبقوں اور نظریاتی گروپ ، مفکرین اور ماہرین کے ساتھ گفتگو کرنے کا منصوبہ بنایا ہے ۔ سنگھ نے آنے والے وقت کے لئے اپنے منصوبہ کا ایک سانچہ بھی تیار کیا ہے جس میں 10 اہم نکات پر توجہ مرکوز کی گئی ہے۔ اس میں سنگھ کی شاخوں کی توسیع خاص طور پر کیرالہ اور بنگال میں سنگھ کے کاموں کا اثر اور اس کی سرگرمیوں کی معائنہ شامل ہے۔ اس کے ساتھ ہی سنگھ ان علاقوں میں اپنے عمل کو متحرک کرے گا جہاں اس کا اثر کم ہے۔ اس کے علاوہ اقتصادی پالیسیوں خاص طور پر کسانوں کے تناظر میں حکومت کی پالیسیوں اور دلتوں اور قبائلیوں پر بھی توجہ رہے گی ۔ دلتوں اور قبائلیوں تک رابطہ کو مضبوط بنانے کی ذمہ داری’’ونواسی کلیان آشرم‘‘کو دیا گیا جو اپنے طور پر کام کر رہا ہے ۔