سی بی آئی مجھ سے بات کرے،میرے بیٹے کوپریشان نہ کرے،چدمبرم

نئی دہلی15ستمبر:ناراض چدمبرم نے آج کہا کہ ایئر سیل۔میکسس معاملے میں سی بی آئی کو میرے بیٹے کو پریشان کرنے کی بجائے مجھ سے پوچھ گچھ کرنی چاہئے۔ انہوں نے الزام لگایا ہے کہ تحقیقاتی ایجنسی غلط معلومات پھیل رہی ہے۔ مرکزی تفتیشی بیورونے2006 میں ہوئے ایئر سیل۔میکسس سودے میں غیر ملکی سرمایہ کاری کو منظوری دینے کے سلسلے میں جمعرات کوپوچھ گچھ کے لیے کارتی کوبلایاتھا۔ یہ منظوری دی گئی تھی جب ان کے والد چدمبرم وزیرخزانہ تھے۔کارتی نے سی بی آئی کی تحقیقات جاری رہنے کے دعوے کی تردید کرتے ہوئے اس کے سامنے پیش ہونے سے انکار کر دیا تھا اور کہا تھا کہ ایک خصوصی عدالت نے تمام ملزمان کو الزام آزاد کر دیا تھا اور اس معاملے کی سماعت ختم ہوچکی ہے۔ پی چدمبرم نے ایک کے بعد ایک کئے گئے ٹویٹس کے ذریعے کہاکہ ایئر سیل۔میکسس میں سفارش کی تھی اور میں نے اس کارروائی کے کی تفصیلات (منٹس) کی منظوری دے دی تھی۔ سی بی آئی مجھ سے سوال کرے اور کارتی چدمبرکوپریشان نہ کرے ۔پی چدمبرم نے ایک ٹویٹ میں کہاکہ سی بی آئی نے معلومات کو غلط سمجھا ہے۔ ایئرسل۔میکسس میں ایف آئی پی بی حکام نے سی بی آئی سے پہلے ایک بیان درج کیا ہے جس میں انہوں نے کہا کہ منظوری درست تھی۔