ملت اسلامیہ اپنے مسلکی اختلافات کے باوجود متحد ہے مسلکی و ذاتی اختلافات ہمارے مسائل پر حاوی نہیں ہو سکتے، مولانا عطاء الرحمن وجدی سہارنپور ،ا حمدرضا صحافی ,آمنا سامنا میڈیا

سہارنپور ،ا حمدرضا صحافی ,آمنا سامنا میڈیا
ملت اسلامیہ ہند اپنے اپنے مسلکی اختلافات کے باوجود متحد ہے مسلکی و ذاتی اختلافات ہمارے مسائل پر حاوی نہیں ہو سکتے امت مسلمہ کے درپیش مسائل کیلئے تمام مسلمان متحد ہیں اور جب بھی ضرورت ہوگی ایک پلیٹ فارم پر نظر آئیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار امیر وحدت اسلامی ہند اور متحدہ مجلس عمل کے صدر مولانا عطاء الرحمن وجدی نے کیا ۔ مولانا موصوف جامعہ ہدی للعالمین میں ضلع سہارنپور کے مدارس و ملی تنظیموں کے ذمہ داران اور دانشوران کی ایک بڑی میٹنگ سے خطاب کر رہے تھے ۔ یہ میٹنگ میانمار میں روہنگیا مسلمانوں پر ہو رہے ظلم و تشدد کے خلاف بلائی گئی تھی جس میں اتفاق رائے سے یہ طے پایا گیا کہ ضلع کے تمام مسلمان مظلوم روہنگیا مسلمانوں کے دکھ ، درد اور انکی تکالیف میں برابر کے شریک ہیں اور اس ظلم و زیادتی کے خلاف 26ستمبر بروز منگل کو جامعہ ہدی للعالمین ہلالپور میں ایک عظیم الشان اجلاس بلانے پر بھی متفقہ فیصلہ لیا گیا ۔ اس میٹنگ کی صدارت مولانا طاہر شیخ الحدیث مدرسہ فیض ہدایت رحیمی رائے پورنے کی ار نظامت کے فرائض مولانا اطہر حقانی ندوی سیکریٹری تنظیم دعوت الحق نے انجام دئے۔ میٹنگ کا آغاز قاری محمد اکرام کی تلاوت کلام اللہ اور مولانا ارشاد عقابی کی نعت پاک سے ہوا۔ مولانا عطاء الرحمن وجدی نے میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت ملت کا اتحاد وقت کی سب سے بڑی ضرورت ہے ہم سب کو آپسی اختلافات کو بھلاکر ایک پلیٹ فارم پر متحد ہوکر میانمار کے روہنگیا مسلمانوں پر ہو رہی ظلم و زیادتی کے خلاف بڑے ہی پرامن اور منظم طریقے سے اپنی آواز کو اقوام متحدہ تک پہنچانی چاہئے تاکہ وہ میانمار حکومت کے خلاف عالمی سطح پر ایکشن لے سکے ۔ مدرسہ مظاہر علوم وقف کے استاد حدیث مولانا ریاض الحسن ند وی نے میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ برما میں مسلمانوں پر ہو رہا ظلم و تشدد انسانی قدروں کی پامالی ہے اور میانمار میں وہاں کی ظالم اور سفاک فوج نے ظلم کی تمام حدوں کو پار کر دیا ہے اور مسلسل وہاں کے اقلیت مسلمانوں کا قتل عام جاری ہے ہم سب کو اس پر اپنا احتجاج درج کروانا چاہئے ۔ جمعیۃ علماء ہند مغربی یوپی و ضلع سہارنپور کے صدر مولانا ظہور احمد قاسمی نے اپنے خطاب میں کہا کہ میانمار کے مسلمانوں پر ہورہے ظلم کے خلاف عالمی برادری کو ایک ہو جانا چاہئے انھوں نے کہا کہ مسلمانوں کو چاہئے کہ وہ ملت کے مسائل پر اتحاد کا مظاہرہ کریں کیونکہ ہمارا اتحاد ہی تمام پریشانیوں و مصیبتوں کا حل ہے ۔ مولانا نثار مظاہری نے بھی اپنے خطاب میں امت کے اتحاد پرزور دیا اور تمام مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ مسلکی اختلافات کو درکنار کرتے ہوئے ایکپلیٹ فارم پر متحد ہوکر اس ظلم و تشدد کے خلاف اپنی آواز کو بلند کریں ۔ ا س موقعہ پر مولانا اسعد ندوی جامعہ مظاہر علوم ، تنظیم دعوت الحق کے صدر قاری سعید احمد ، مولانا شاہد مظاہری شہر صدر جمعیۃ علماء ہند (محمو مدنی)،مولاناساجد کاشفی نائب شہر صدر جمعیۃ علماء ہند (ارشد مدنی)، مولانا عبدالرشید مرزاپور، مولانا حبیب اللہ قاسمی استاد حدیث جامعہ کاشف العلوم چھٹمل پور، مظہر عمر خان، طاہر علی ، حیدر رؤف صدیقی ، حافظ سعید، سید حسان (صحافی )، عارف خان ، مولانا یامین پانڈولی، مولانا شریف خان دارالعلوم زکریا دیوبند، مولانا پٹلوکر، حافظ اویس تقی، مولانا منیس ندوی خانقاہ رائے پور، مفتی عطاء الرحمن قاسمی ، مولانا عزیزاللہ ندوی ادارۃ الصدیق بہٹ، شیرشاہ اعظم، قاری شبیر احمد قاسمی، مولانا شمشاد گاگلیہڑی، مولانا سلیمان مظاہری المعہدالاسلامی مانک مؤ، مولانا سلیم سنسارپور، مولانا انتظار وغیرہ موجود رہے۔ جامعہ ہدی للعالمین کے مہتمم قاری سعید احمد نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا ۔