محسن رضاکی جیت سے یوگی سرکار کے قد میں اضافہ!

سہا رنپورآمنا سامنا میڈیا( خاص خبر احمد رضا) ریاستی وزیر اوقاف محسن رضا کی ایم ایل سی چناؤ میں بلا مقابلہ جیت نے ریاست بھر کے عوام کو جھومنے پر مجبور کردیاہے ایک لمبے عرصہ بعد یوپی کی سیاست میں یہ وقت بھی آگیاہیکہ جب بھاجپاکے سبھی بڑے عہدے دار ایم ایل سی چناؤں میں بلا مقابلہ منتخب ہوکر ایوان اسمبلی میں پہنچے ہیں!مسلم عوام کے سوشل، سیاسی، تعلیمی مسائل کیعلاوہ مدارس کے مسائل ، مساجد کے تنازعات اور وقف املاک کی بد حالی کے دور میں یوگی سرکار نیواحد مسلم قائد محسن رضا کو اپنی کابینہ میں وزیر مقرر کرتے ہوئے جو حکمت عملی اپنائی آج یہ اسی کارکردگی کا نتیجہ ہیکہ محسن رضا کی دیانتداری اور حق گوئی نے لکھنؤ کے ایک بڑے مسلم اور مہذب طبقہ کو یوگی کے ساتھ لا کھڑا کیاہے اور یوپی میں مسلم مسائل جو ایک بڑا سنگین ایشو بنے تھے وہ بھی یوگی کی پانچ ماہ پرانی سرکار میں دھیرے ے دھیرے خد ہی حل ہونے لگے آج یوگی سرکار کی حمایت جہاں مدارس، خانقاہوں اور وقف تنظیموں کے ذریعہ کیجارہی وہیں مقامی مسلم ووٹرس بھی اب بہت اچھی تعداد میں محسن رضاکے ذریعہ یوگی گروپ کے ساتھ آکھڑے ہوئیہیں اس بدلاؤ سے یوگی سرکار کی مقبولیت میں کافی نکھار آگیاہے ؟ ریاستی بھاجپائی رہبر اور اودھ کی رائل فیملی کے چشم وچراغ نواب تبریز رضا نے محسن بھائی کی جیت پر انکو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہاکہ سرکار کے قیام کے بعد ہی سے محسن رضا نے اپنے وزارتی کاموں کو جس سنجیدگی کے ساتھ نپٹایا وہ قابل قدر کارکردگی کا چھوٹا سانمونہ ہے اپنی دیانتداری سے محسن بھائی کافی سدھار لانا چاہتے ہیں وقت آجانیپر حالات قوم کیلئے کافی بہتر ثابت ہونگے نواب تبریز نے کہاکہ ہمارے ریاستی وزیر اوقاف محسن رضا نے گزشتہ دنوں اپنی سرکار کے وقف املاک کے تحفظ سے متعلق بیباک فیصلہ کو وقف املا ک کے مکمل تحفظ کا ضامن بتاتے ہوئے کہا تھاکہ وقف قوم کی وراثت ہے ہماری سرکار اس وراثت کا صدق دل سے تحفظ چاہتی ہے تاکہ بد حال قوم کی فلاحی اور بہتری سے جڑی اسکیموں میں وقف املاکفیض کا سبب بن سکے نواب تبریز نے اب تک یوگی سرکار کی کاوشوں اور کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ مافیاراج ہرمحکمہ اور علاقہ سے ختم کیاجارہاہے اب یوپی میں یوگی کا یونیک اور سپر فائن راج کاج چلیگا غنڈہ گردی ، لوٹ پاٹ مذہب اور مسلک کے نام پر تصادم نہی ہونے دیاجائیگا! نواب تبریز نے بتایاکہ اوقاف کے اسٹاف و صدر کے خلاف جو سنجیدہ ایکشن یوگی سرکار نے لیاہے وہ صد فیصد وقف املاک کی بہتری کیلئے اچھا ہے ریاست مسلم طبقہ بھی اس اقدام سے مطمئن ہے ! شیعہ وقف کی بابت آپنے کہاکہ عدالتی اسٹے کی بنیاد پر شیعہ اوقاف کے صدر آگے بھی اب اپنی من مانی بھی نہی کر سکتے ہیں وقف کو جو نقصان ہونا تھا وہ ہوچکاہے اب سرکار وقف املاک کو برباد نہی ہونے دیگی!رضانے کہاکہ جب یوپی میں راجناتھ سنگھ چیف منسٹر تھے تب بھی وقف کو مکمل تحفظ ملاتھا مگر سماجوادی اور بسپاکی سرکاروں میں ہمیشہ ہی وقف املاک کو تباہ وبربادہی کیا گیاہے آج ریاست میں پھر سے بھاجپا سرکار میں آئی ہے تو یوگی سرکار نے بھی وقف کے تحفظ کا جو پرچم اٹھایاہے اسکے بہتر نتائج ضرور ہم سبھی کے سامنے آئیں گے اصل میں یہ املاک ہمارے بزرگوں کی ہے اسکا تحفظ بیحد ضروری ہوگیاہے؟ حیرت کی بات تو یہ ہے کہ وقف بورڈ کے جو چیئر مین بسپاکی حمایت سے بنے تھے سماجوادی سرکار بن جانیکے بعد پھر سے وہی شخص اکھلیش کے وفادار بنگئے اور وقف کے اسی اہم عہدے پر فائز ہوگئے کسی نے یہ تک نہی پوچھا کہ کل تک جسکی خدمات بہوجن سماج پارٹی کیلئے تھیں آج پھر وہی سماجوادی کا وفادار کیوں بن بیٹھا یہاں بھی سارا کا سارا کھیل کی وقف املاک کی بندر بانٹ کاہے جو جتنا فیض پارٹی قائدین اور وقف ملازمین کو پہنچائیگا وہ اتناہی وفادار کہلائیگاپچھلے دس سالوں سے شیعہ اور سنی وقف بورڈ میں یہی چل رہاہے!