مالونی میں ایس آئی او کی مہم تکریم انسانیت کا اختتامی پروگرام

اسٹوڈنٹس اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیاکی ایک ماہ کی تکریم انسانیت مہم کا اختتامی پروگرام ایس آئی اومالونی یونٹ کی طرف سے مورخہ ۱۰ ستمبرکو رمضان علی انگلش اسکول کے ہال میں پروگرام رکھا گیا۔جس میں مختلف مقررین کو مدعو کیا گیا۔اختتامی پروگرام کا آغاز ۱۰ بجے جناب حود فلاحی صاحب کے ذریعے تلاوت قرآن سے ہوا۔ا س کے بعد ایس آئی اومالونی یونٹ کے صدر برادر شادان صدیقی نے مہم کے اغراض و مقاصد پیش کیے ۔اس کے بعدایس آئی او ساؤتھ مہاراشٹرا کے صدر برادرسلمان احمد نے تقریر کی۔ انہوں نے اپنی گفتگو کے دوران یہ کہا کہ تمام مذاہب کے لوگ آدم اور حوا کی اولاد ہیں اوربھائی بھائی ہیں۔اس کے بعد گرومیت سنگھ صاحب(سکھ گرو) نے تقریر کی ۔انہوں نے اپنی تقریر کے دوران کہا کہ جب تک ہم ایشور سے دور رہتے ہیں تو حیوانیت آتی ہے اور جب ایشور سے جڑ جاتے ہیں تو حیوانیت کا اندھیرا ختم ہو جاتا ہے۔


بعد ا ذاں سنت مکتیش آنند جی طلبہ ونوجوانوں سے مخاطب ہوئے ۔ جس میں انہوں نے یہ کہا کہ اپنے فرض کو یاد کر کرتے ہوئے پرماتما کو یاد کرتے رہیں۔اس کے بعد مولاناابو ظفر حسن ندوی صاحب (اسلامک اسکالر)نے خطاب کیا اورانہوں نے کہا کہ جو اپنے لیے پسند کرے وہی اپنے بھائی کے لیے پسند کریں ۔انسان کو نا جائزخواہشات جرائم پر آمادہ کتی ہیں جب کہ ایمان انسانیت سکھاتا ہے۔ ایس آئی او آف انڈیا کے صدر برادرنحاس مالا نے صدارتی خطبہ کے دوران یہ کہا کہ انسان اپنے آپ کو خدا سمجھنے لگے تو ظلم و ستم پھیل جاتا ہے۔ مزید انہوں نے کہا کہ اب یہاں سے آپ کو تکریم انسانیت کے لیے کام کرنا ہے۔اس کے بعد جن اسکولوں میں تکریم انسانیت مہم کے دوران جو مقابلے کرائے گئے تھے تو ان کے انعامات کی تقسیم برادر نحاس مالا کے ذریعے عمل میں لائی گئی۔پھر مالونی کے تکریم انسانیت کے مہم کنوینر برادر ابراہیم نے رسم شکریہ ادا کیا۔اس کے بعد امیر مقامی جناب الیاس صاحب کی دعا پر پروگرام کا اختتام کیا۔پروگرام میں تقریباََ۱۲۰۰ لوگ موجود تھے۔