مودی ایک دن کے لئے ہٹلر بن جائیں، حل ہو جائے گا کشمیر مسئلہ،شیوسیناکامشورہ سرکارکی تنقید،نوٹ بندی اورسرجیکل اسٹرائیک غیرموثر،بی جے پی ایفائے عہدمیں ناکام

ممبئی14جولائی

مرناتھ یاترا پر ہوئے دہشت گردانہ حملے کے بعدچوطرفہ تنقیداورناکامی کے الزام کے درمیان مودی حکومت کی اتحادی شیوسینا نے کافی سخت رد عمل دیا ہے۔شیوسینا کے ترجمان سنجے راوت نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کا ایک دن میں حل ہو سکتا ہے اس کے لیے اگر وزیر اعظم نریندر مودی کو ایک دن کے لئے ہٹلر بننا پڑے تو وہ ساتھ ہیں۔راوت نے کہا کہ اگر پی ایم مودی اس معاملے پر کچھ نہیں کر پائے، تو کوئی بھی کچھ نہیں کر پائے گا۔شیوسینا کے ترجمان سنجے راوت نے کہاکہ کہ اس وقت کشمیر میں جنگ چل رہی ہے۔ہماری بی جے پی سے نظریے کی یا ذاتی لڑائی نہیں ہے نہ ہی کبھی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ اگر کشمیر کے بارے میں ہم پرانی باتیں حکومت کو یاد دلاتے ہیں تو اس میں جھگڑا کس بات کاہے۔مودی جی آپ اس ملک کے لئے امید کی کرن ہیں، آپ کو کچھ نہیں کر پائے تو کوئی کچھ نہیں کر پائے گا۔سنجے نے کہا کہ ہم کشمیر میں امن چاہتے ہیں، اپنے جوانوں کی شہادت بند ہونی چاہئے۔وہاں جنگ نہیں ہے تب بھی ہمارے جوان محفوظ نہیں ہیں۔شیوسینا لیڈر سنجے راوت نے امرناتھ یاترا پر دہشت گردانہ حملے کو لے کر مودی حکومت پر سوال کھڑے ہوئے کہاکہ یہ بدقسمتی ہے کہ مودی حکومت کے ہوتے ہوئے ایسا ہوا۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے کئے گئے دعووں کاکیاہوا۔راوت نے کہا کہ مودی حکومت کے سارے دعوے کھوکھلے ثابت ہو گئے ہیں۔انہوں نے پی ایم مودی کے 56انچ کے سینے پر سوال اٹھایا۔ساتھ ہی سنجے راوت نے بتایا کہ نوٹ بندی اور سرجیکل اسٹرائیک کا دہشت گردی پر کوئی اثر نہیں پڑتا ہے۔