ملی کونسل کا ’’دستور بچاؤ ملک بناؤ‘‘ کنونشن

سہارنپور(احمد ضا) وحدت اسلامی کے سربراہ اے آر وجدی نے ملکی حالات حاضرہ پر تفصیل سے روشنی ڈالی اور کہا کہ اسوقت ملک عدم رواداری اور تناؤ کے سنگین حالات سے دوچار ہے، دستوروقانون سے کھلواڑ کیا جارہا ہے اور خصوصاً ملک کی سب سے بڑی اقلیت کو بہت سے مسائل درپیش ہیں ایسے حالات میں ہمیں صبروتحمل سے کام لینا چاہئے اور اپنی صفوں میں اتحاد پیداکرنے کی کوشش کرنی چاہئے اپنے ایک بیان میں آج وحدت اسلامی کے سربراہ اے آر وجدی نے زور دیکر کہا ہے کہ قانون و دستور کی بالادستی قائم کرنے کیلئے اور آپسی اتحادویکجہتی کی فضا بنانے کیلئے اور ملک میں امن و امان اور گنگاجمنی تہذیب جو اس ملک کی روایت رہی ہے اس کو مضبوط کرنے کیلئے آل انڈیا ملی کونسل نے ۳۰؍جولائی ۲۰۱۷ء دس بجے دن تالکٹورہ اسٹیڈیم دہلی میں ملک گیر پیمانے پر ’’دستور بچاؤ ملک بناؤ‘‘ کنونشن کرنے کا فیصلہ کیا ہے وحدت اسلامی کے سربراہ اے آر وجدی نے کہاکہ اس بڑے اور اہم کنونشن میں سبھی مذاہب کے دھرم گروؤں، سماجی لوگوں، صحافی نمائندوں کو مدعوکیا گیا ہے، جس میں بلاتفریق مذہب وملت زیادہ سے زیادہ تعداد میں پہونچنے کی اپیل کی گئیاے آر وجدی نے کہاکہ آل انڈیا ملی کونسل نے ۳۰؍جولائی ۲۰۱۷ کو جو کنونشن مدعو کیاہے وہ ملک کی سالمیت اور قانون کی بالا دستی قائم رکھنے کیلئے پر وزن ثابت ہوگا!