سفر کے دوران اپنے سوٹ کیس پرگھر کا مکمل پتہ لکھناخطرناک ثابت ہو سکتا ہے

دبئی،16جون:دوران سفر مسافروں کے لیے سفری بیگ لے کر سفر کرنا کسی ڈراؤنے خواب سے کم نہیں۔ دوران سفر بیگوں کے گم ہونے کے خدشات دامن گیر رہتے ہیں۔ بسا اوقات یہ خدشہ درست ثابت ہوتا ہے۔ سفری بیگ یا غائب ہو جاتے ہیں یا دوسرے مسافروں کے سامان کے ساتھ بدل جاتے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ دوران سفر اپنے سفری بیگوں کے حوالے سے ایک غلطی آپ کو کسی بڑی پریشا نی میں ڈال سکتی ہے۔ اس لیے احتیاط کا تقاضا ہے کہ سفری بیگوں میں اپنے گھر کا مکمل ایڈریس نہ چھوڑیں۔ بیگ گم ہونے کی صورت میں آپ کے گھر کا پتا کسی بھی ایسے جرائم پیشہ شخص کو مل سکتا ہے جو آپ کے گھر میں چوری یا ڈاکہ ڈالنے کی جسارت کر سکتا ہے۔
برطانیہ کے سابق شاہی ہوا باز جونتاھن بریز کا کہنا ہے کہ سفری سامان یا بیگوں کے اندر اپنے گھر کا تحریری طورپر ایڈریس رکھنا غلطی ہے۔ سامان گم ہونے کی صورت میں آپ کیگھر کا ایڈریس کسی بھی خطرناک شخص کے ہاتھ لگ سکتا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ دوران سفر اپنا بزنس کارڈ، شناختی کارڈ یا کوئی بھی تعارفی کارڈ پر جس آپ کیگھر کا پتا درج ہو نہیں رکھنا چاہیے، ورنہ کوئی بھی حادثہ ہوسکتا ہے۔سفری شعبے میں کام کرنے والے رچرڈ کلیف ایونز کہتے ہیں کہ سفری بیگ میں آپ کے گھر کا ایڈریس چوروں کو آپ کے گھر کا راستہ بتانے کا موجب بن سکتا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اپنے سفری بیگوں میں صرف اپنا ذاتی یا دفتر کا فون نمبر رکھیں۔ اگر سامان گم ہونے کی صورت میں کوئی شخص آپ کے سامان کو واپس کرنے میں سنجیدہ ہو تو آپ سے ٹیلیفون پر آپ کو مطلع کرے۔ اگر آپ سامان میں گھر کا ایڈریس بھی رکھیں گے تو آپ سامان سے محروم ہونے کے ساتھ اپنے گھر سے بھی ہاتھ دھو سکتے ہیں۔