بابری مسجد کیس: کوئی سازش نہیں، کارکنوں کے ساتھ میں بھی موجود تھی: اوما بھارتی

نئی دہلی۔ ۳۰؍مئی: (نیوز۱۸؍ہندی) اجودھيا میں متنازعہ ڈھانچہ گرانے کے معاملے میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت میں پیشی سے پہلے ملزم اوما بھارتی نے کہا کہ ایودھیا میں کچھ بھی سازش نہیں ہوئی تھی۔ یہ ایک کھلی تحریک تھی۔ آبی وسائل، ندیوں کی ترقی اور گنگا کی صفائی کی وزیر اوما بھارتی نے کہا کہ ایودھیا میں جو بھی ہوا، وہ سب کھلا تھا۔ یہ ایک کھلا آندولن تھا جیسا ایمرجنسی کے خلاف ہوا تھا۔ بی جے پی کے کروڑوں کارکن اس میں شامل ہوئے تھے۔ اس آندولن میں کیا سازش تھی یہ مجھے ابھی پتہ نہیں۔واضح رہےکہ منگل کو اسپیشل کورٹ بی جے پی کے سینئر لیڈر لال کرشن اڈوانی، اوما بھارتی، مرلی منوہر جوشی، ونے کٹیار، سادھوی رتنبھرا اور وشنو ہری ڈالمیا پر الزام طے کرے گی۔ انہیں کورٹ کے سامنے پیش ہونا ہوگا۔ کلیان سنگھ کو گورنر رہنے تک چھوٹ حاصل ہے۔