آخری جمعہ یوم القدس پر بیت المقدس کی آزادی کے لیے دعا اور عہد

آخری جمعہ یوم القدس پر بیت المقدس کی آزادی کے لیے دعا اور عہد

تحریر : شیخ سلیم

آج رمضان المبارک کا آخری جمعہ ہے

آخری جمعہ بطور یوم القدس منایا جاتا ہے اور پوری دنیا کے مسلمان بیت المقدس کی آزادی کے لیے دعا اور عہد کرتے ہیں۔ ہم سبھی جانتے ہیں قبلہ اول 1967 سے صیہونیوں کے ناپاک قبضے میں ہے۔ رمضان المبارک کے اس آخری جمعہ میں پورے فلسطین سے فلسطینی مسلمان اپنی جان کی بازی لگا کر مقبوضہ یروشلم میں مسجد اقصیٰ میں آتے ہیں جگہ جگہ یہودی مسلمانوں کے لیے رکاوٹیں کھڑی کرتے ہیں ابھی ستائیسویں شب میں ڈھائی لاکھ سے زیادہ توحید کے متوالے اپنی جان ہتھیلیوں پر لیکر مسجد اقصیٰ پہونچ گئے تھے ایک دن پہلے ہی صیہونیوں نے مسجد اقصیٰ پر دھاوا بول دیا تھا۔ عالم اسلام نے فلسطینیوں سے اظہار یکجحتی بھی اب کم کر دیا ہے مدد تو دور کی بات ہے کی مسلم ممالک نے یہودی ریاست سے سفارتی تعلقات بنا لیے ہیں عالم اسلام ایک مشکل حالات سے گزر رہا ہے اللہ تعالیٰ سے دعا ہے اہل فلسطین کی غیب سے مدد فرمائے۔
ساتھ ہی ہمارے ملک میں بھی کئی جگہوں پر حالات ناساز ہیں مسلمان آزمائش سے گزر رہے ہیں خصوصاً بھاجپا کی حکومت والے علاقوں میں وہاں بھی اُنہیں جمعہ الوداع کے موقع پر نماز پڑھنے پر مشکلات درپیش ہیں اللہ تعالی سے دعا ہے امت مسلمہ کی حفاظت فرمائے اور خصوصی مدد فرمائے۔ آمین ثم آمین یارب العالمین۔