وسیم رضوی مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کررہا ہے : مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی

وسیم رضوی مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کررہا ہے : مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی

سہارنپور,  بھارت ایک جمہوری ملک ہے جہاں تمام مذاہب کے لوگ امن و شانتی کے ساتھ رہتے آئے ہیں۔اس امن و شانتی کے ماحول کو کوئی شخص اگر خراب کرتا ہے تو سرکار کی ذمہ داری ہے کہ اس کو پکڑے اور گرفتار کرے۔
عدالت سے ناکام و نا مراد ہونے کے بعد اب مردود وسیم رضوی نے بھارت کے وزیر اعظم نریندر مودی کو خط لکھ کر اپنا پیش کردہ قرآن کریم سماج میں پڑھائے جانے کے لئے اور مدرسوں میں اسے داخل کئے جانے کی مانگ کی ہے۔

کافی دنوں سے وسیم رضوی مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کررہا ہے اور ملک کے ماحول کو بگاڑ رہا ہے۔
مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی ضلع صدر آل انڈیا ملی کونسل سہارن پور نے وسیم رضوی کی شدید الفاظ میں مزمت کرتے ہوئے کہا کہ
کسی بھی مذہب کی مقدس کتاب کی توہین کر کے لوگوں کے مذہبی جذبات کو مجروح کرنا ایک بہت بڑاجرم ہے،جسکا اندازہ ہمارے ملک کے وزیر اعظم کو بھی ہے اور ہمیں یہی امید ہے کہ جس طرح وسیم رضوی عدالت سے دھتکارا گیا اور عدالت نے اسکی عرضی کو ّمضحکہ خیز عرضی قرار دیا اسی طرح بھارتی وزیر اعظم بھی اس خط کو ردی کی ٹوکری میں ڈال دینگے اور ایسے فتنہ انگیز شخص کے خلاف کاروائی کرینگے۔
آل انڈیا ملی کونسل سہارنپور کی سرکار سے درخواست ہے کہ ملک کے حالات کو دیکھتے ہوئے اور ماحول کو پرامن بنائے رکھنے کے لئے وسیم رضوی کے خلاف سخت سے سخت ایکشن لیا جائے اور گرفتار کرکے جیل بھیجا جائے تاکہ ملکی فضا خوشگوار رہے۔