اسلامیہ ایجوکیشنل چیری ٹیبل سوسائٹی اور قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کی جانب سے اسلامیہ ڈگری کالج کے آئی ایچ ایم آڈیٹوریم میں نےنیشنل سیمینار بعنوان دبستان دیوبندکی ادبی و صحافتی خدمات

دیوبند:19 دسمبر ( فیروز خان)
اسلامیہ ایجوکیشنل چیری ٹیبل سوسائٹی اور قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کی جانب سے اسلامیہ ڈگری کالج کے آئی ایچ ایم آڈیٹوریم میں نےنیشنل سیمینار بعنوان دبستان دیوبندکی ادبی و صحافتی خدمات منعقد کیا گیا ۔جس میں مختلف یونیورسٹیوں سے آئے اسکالروں نے مقالات پیش کئے اور ملک کی آزادی اور اسکی تعمیر و ترقی میں دبستانِِ دیوبند کی ادبی و صحافتی خدمات ،اردو صحافت کے ارتقاءمیں دیوبند کا حصہ ،دیوبند کے ادبی و صحافتی کردار کا سیاسی پس منظر ،اردو ادب کے فروغ میں علمائے دیوبند کا کردار ،مذہبی ادب کے ذریعہ اردو زبان کا فروغ ،جد و جہد آزادی میں دیوبند کی ادبی سرگرمیاں ،اردو ادب و صحافت کے فروغ میں علمائے دیوبند کی خدمات پر روشنی ڈالی،سیمینار کے دوران محکمہ اردو جامعہ ملیہ اسلامیہ نئی دہلی کے سابق سربراہ پروفیسر قاضی عبدالرحمان ہاشمی،اردو این سی ای آر ٹی نئی دہلی کے پروفیسر ایم معظم الدین ، ڈاکٹر چاندنی عباسی مظفر نگر ،پروفیسر لکھن شرما مہاراج ہری دوار ،معروف ادیب وصدر اردو ٹیچر ایسویشن دیوبند سید وجاہت شاہ ،عبدالرحمان سیف اور راشٹریہ مدرسہ ایجوکیشن انچارج و ممبراین سی یوایل محمد مظاہر خان ،این سی پی یو ایل نئی دہلی کے وائس چیرمین پروفیسرشاہد اختر پروفیسر ارشد غازی اور اتراکھنڈ حکومت کے سابق مشیر پروفیسر تنویر چشتی سمیت مختلف اسکالروں نے مقالے پیش کئے ۔پروگرام کا آغاز حافظ سائم کی تلاوت کلام پاک سے ہوا اور نعت نبی عبدالکلام نے پیش کی۔سیمینار میں اپنی پرکشش آواز میں غزل سناکر آفرین خانم نے حاضرین کا دل جیت لیا ۔اپنے صدارتی خطبہ مےں انٹر فیتھ ہارمونی فاو نڈیشن آف انڈیا (نئی دہلی ) کے چیرمین ڈاکٹر خواجہ افتخار نے کہا کہ دنیا کو ہمیشہ خبروں سے دلچسپی رہی ہے الگ الگ ملکوں میں الگ الگ علاقوں میں اپنی زبان کے مطابق اخبارات کی اشاعت ہوتی رہی ہے آزادی کے لئے اردو نے اہم رول ادا کیا ہے ۔اس دوران ریسرچ اسکالرس اوراردو اخبارات میں صحافتی خدمات انجام دینے کے اعتراف میں مقامی صحافیوں کو اعزاز اور سرٹیفکٹ سے نوازا گیا ۔پروگرام میں ادارہ کے سکریٹری ڈاکٹر عظیم الحق اور پرنسپل ڈاکٹر اسجد ترکی وغیرہ نے بھی مختصر خطاب کیا ۔اس موقع پر مولانا شاہ عالم قاسمی،حاجی فیروز خان ،ڈاکٹر شمیمدیوبندی،نور الحسن،قاری عامر عثمانی،ڈاکٹر انور پاشا،فرخ صدیقی اور ڈاکٹر محمد اخلاق کے علاوہ بڑی تعدادمیںطلبہ و طالبات اور معزز شہر ی موجود تھے ۔