عید الاضحى پرقربانى کو لیکر ملی، سماجی اور مذہبی تنظیموں کا ریاستی حکومتوں اور مقامی ضلع انتظامیہ سے مطالبہ

چند دنوں کے بعد عید الاضحى آنے والى ہے،جسکى ایک اہم عبادت قربانى ھے،کورونا وائرس کى شدت  اور لوک ڈاون کے باعث موجودہ حالات میں مسلمانوں کى طرف سے قربانى اور نماز عید کے بارے ملک میں بے چینی پایئ جارہی ہے ، ریاستی حکومتیں اور مقامی ضلع انتظامیہ اگر ایماندارای اور انصاف کے ساتھ سوچیں تو راستہ ہموار ہو سکتا ہے خاص طور سے ان علاقوں میں جہاں لاک ڈاؤن میں چھوٹ ہے اور جہاں کورونا وبا پر قابو پا لیا گیا ہے ۔ اس مطالبے کو لیکر ملک کی ملی، سماجی اور مذہبی تنظیمیں کوشش کررہی ہیں  ، اسى سلسلے میں ضلع سہارنپور کے مقامى علماء کے ایک وفد نے ضلع مجسٹریٹ جناب اکهلیش سنگھ سے ملاقات کرکے انکو چند نکاتى میمورنڈم پیش کیا ہے جسمیں کہا گیا ہے کہ عید الاضحى کا تہوار قریب ہے اور قربانى اسلام میں ایک بہت بڑى عبادت ہےجسکا اور کؤئ متبادل نہیں،لھذا جہاں جہاں جانوروں کے بازار لگتے ہیں اور لوگ وہاں سے قربانى کے  جانور خریدتے ہیں،کورونا انفیکشن کے باعث وہاں بازار کیسے لگاۓ جائیں  اور اسکے لیے  کیا اصول اور ضابطے درکار ہیں انکى وضاحت کى جائے۔
میمورنڈم میں یہ بهى مطالبہ کیا گیا کہ عید الاضحى کے موقع پر عیدگاہ اور مساجد میں نماز پڑھنے کے لۓ واضح احکامات جاری کئے  جائیں  اور اس سلسلے میں کیا انتظامات ہو انکى بهى نشاندہی کى جاۓ۔ اس پر ڈی ایم صاحب نے کھا کہ  سرکاری گائڈ لائن جلد ھی آنے والی ھے ،ھم آپ کو اس سے مطلع کرینگیں  وفد میں قاضی ندیم اختر، نائب شھر قاضی ،مولانا فرید مظاھری مینیجر جامع مسجدو نائب ضلع صدر جمیعةعلماء ھند ،مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی ضلع صدر ملی کونسل سھارنپور،مولانا یعقوب بلند شھری صدر آل انڈیا دینی مدارس بورڈ ،مولانا احمد سعیدی ،مدرسہ مظاھر علوم وقف،مفتی صالح الحسنی جامعہ مظاھر علوم ،سماجی کارکن حاجی اوصاف گڈو حاجی ایم شاھد زبیری نائب صدر جمیعةعلماء ھند سھارنپور