ایڈوکیٹ محمود پراچہ صاحب کی غیر ذمے دارانہ گفتگو کے سلسلے میں ایک وضاحتی بیان


مفتی محمد حذیفہ قاسمی بھیونڈی ناظم تنظیم جمعیہ علماء مہاراشٹر
یہ حضرت کچھ دنوں تک ھماری جمعیت کے کیسز دیکھتے تھے اسوقت کے انکے نخروں کی ایک طویل داستان ہے  ۔جس سے تنگ آکر ھمارے ذمہ داران نے یہ ذمہ داری پراچہ صاحب سے لے کر ایڈو کیٹ تہور خان اور انکی مخلص ٹیم کے حوالے کر دیا ۔جو بحمد اللہ انتہائی جفا کشی اور ملی خدمت کے جذبے سےکام کر رھے ھیں ۔۔اور مسلسل کامیابی سے ہمکنار ہورھے ھیں۔پونا جرمن بیکری کیس  میں بعض خامیوں کی وجہ سےمقامی کورٹ میں حمایت بیگ کو پھانسی کی سزا ہو گئی تھی ۔لیکن ھماری جمعیت کے وکلاء کی کامیاب پیروی کے نتیجے میں بمبئی ہائی کورٹ سے حمایت بیگ کو پھانسی کی سزا سمیت 14 کیسوں سے باعزت رہائی نصیب ہوئ ۔جسکی تفصیلی رپورٹ اخبارات میں شائع ہو چکی ھے ۔۔جبکہ پراچہ صاحب کی گفتگو سے یہ تاثر ملتا ہے کہ شائید حمایت بیگ کو پھانسی کی سزا ہو گئی ہوگی۔پراچہ صاحب نے اپنی پوری بکواس میں اپنی بات کے حوالے میں علاوہ جرمن بیکری پونا کیس کے کوئی ثبوت نھیں پیش کیا ۔اور جمعیہ علماء کے ذمہ داران کے خلاف لگائے گئے بے بنیادالزامات کے ثبوت وہ رو برو پیش کرینگے، یہ ان کا دعوی ہے۔آپ خود ھی اندازہ کرلیں کہ انکی باتوں میں کتنا دم ھے ۔اور وہ کس کے اشاروں پر یہ ہفوات بک رھے ھیں اور اصل درد کی بنیاد کیا ہو سکتی ہے۔
جبکہ کئی سال قبل ھی ھماری جمعیت کے ذمہ داران ان سے معذرت کرچکے ہیں ۔۔اور بحمد اللہ کیسوں میں جمعیہ علماء مہاراشٹر کی کامیابیوں اور پیش رفت کا سلسلہ مسلسل جاری ہے اور فی الحال جمعیت علماء مہاراشٹر ۱۵۵ کیسوں کی کام یاب پیروی کر رہی ہے۔ جن کی تفصیلات ہماری سالانہ رپورٹ والے کتابچے کے اندر موجود ہیں۔جسکے لئے ملت اسلامیہ جمعیہ علماء مہاراشٹر کے صدر حضرت مولانا ندیم صدیقی صاحب اور انکے وکلاء کی ٹیم کی کی تہ دل سے شکر گزار ہے ۔اور ھمارا یہ کام ھمارے مرکزی قائدین ۔حضرت مولانا قاری محمد عثمان صاحب منصور پوری صدر جمعیہ علماء ھند۔حضرت مولانا سید محمود مدنی صاحب جنرل سکریٹری جمعیۃ علماء ھند ۔کے حکم اور انکی سرپرستی میں چلرہاھے ۔فالحمد للہ علی ذالک ۔