مسجد پر دہشت گردانہ حملہ شرمناک ۔عالمی برادری کونوٹس لینے کی ضرورت ۔ملی کونسل

۔
نئی دہلی
نیوزی لینڈ کی مسجد پر دہشت گردانہ حملہ شرمناک اور بزدلانہ حرکت ہے۔ایسے دہشت گرد اور انتہاء پسند عناصر عالمی امن کے بدترین دشمن ہیں جن کے خلاف سخت کاروائی کے ساتھ ایسے واقعات کا سد باب ضروری ہے ۔ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر محمد منظور عالم جنرل سکریٹری آل انڈیا ملی کونسل نے ایک پریس ریلیز میں کیا ۔انہوں نے مزید کہاکہ گذشتہ کئی سالوں سے مغربی ممالک میں مسلسل مسلمانوں پر سفید پوشوں کے ذریعہ حملہ کیا جارہاہے ۔ انہیں دہشت گردانہ حملہ میں ماراجارہاہے لیکن اس کے سد باب کیلئے کوئی خاص قدم نہیں اٹھایا جارہاہے اور نہ ہی عالمی سطح پر اسے سنجیدگی سے لیا جاتاہے ۔ڈاکٹر منظور عالم نے کہاکہ عالمی میڈیا، سربراہان مملکت اور تجزیہ نگاروں کا رویہ افسوسناک ہے جو مسلمانوں پر ہوئے دہشت گردانہ حملہ پر خاموش رہتے ہیں ۔ایسے واقعات کو فائرنگ قرار دیتے ہیں وہیں دوسری طرف معاملہ اگر برعکس ہوتاہے تو فورا اسے دہشت گردانہ حملہ قرار دیکر دنیا بھرکے مسلمانوں کو دہشت گرد قرار دیاجاتاہے اور براہ راست مذہب اسلام کو دہشت گردی سے جوڑ دیاجاتاہے ۔انہوں نے کہاکہ سچائی یہ ہے کہ مسلم ممالک سمیت دنیا بھر کے مسلمان دہشت گردی کی زد میں ہیں ۔ وہ انتہاء پسند عناصر کے نشانے پر ہیں اورتشدد پسند عناصر دنیا کے مختلف خطوں میں مسلمانوں پر حملہ کررہے ہیں ۔مسجدوں ،مدرسہ اور دینی عباد ت خانوں کا وجود مٹانا چاہتے ہیں جس پر عالمی برادری کو نوٹس لینی کی ضرورت ہے ۔
جمہوریت اور سیکولرزم میں ہر ایک کو اپنے مذہب پر عمل کرنے اور مذہبی شناخت کے ساتھ رہنے کا حق حاصل ہے ۔ نیوزی لینڈ میں مسلمان جمعہ کی نماز ادا کررہے تھے لیکن اس دوران ان پر دہشت گردانہ حملہ کیاگیا جو تاریخ کا بدترین واقعہ ہے اور اقوام متحدہ کو چاہیئے کہ وہ ایسے واقعات کے سدباب کو یقینی بنائے ۔