آپسی بھائی چارہ ہمارے معاشرہ کی اصل بنیاد! میئرسنجیو والیا 

سہارنپور(احمد ضا) آج بھی گنگا جمنی تہذیب کی اگر کہیں مثال دیجاتی ہے تو وہ علاقہ ہمارے دوآب کا علاقہ ہے کہ لاکھ م سیاسی اور نظریاتی من مٹاؤ مل کے بعد بھی ہندو مسلم ایک میز پر بیٹھے نظر آتے ہیں سینئر پولیس افسر ان کا کہناہے کہ آپسی تکرار، بے وجہ کے اختلافات ،رنجشیں اور مذہبی چھینٹا کشی کسی بھی صورت قابل قبول اور ہماری طاقت کیلئے کسی بھی طرح اچھی نہی ہیں ان برائیوں اور کوتاہیوں کو اپنے دلوں سے اکھاڑ پھینکناہی اصل انسانیت اور اصل مذہبی تعلیم وتربیت ہے ہر اچھا عمل ہی ہمارے لئے طاقت کا ضامن بنتاہے، بس ہم پر لازم ہے کہ ہم آپسی بھائی چارے پر کسی بھی شکل میں اور کسی بھی مصیبت کے وقت شکن تک نہ آنے دیں کیونکہ آپسی رنجش اور آپسی حسد تباہی اور بربادی کا سبب بنتے ہیں! ملک میں جہاں آج چاروں جانب عدم رواداری کا بول بالاہے اور جگہ جگہ تشدد کے واقعات میں لگاتار اضافہ صاف نظر آرہاہے وہیں ہمارے ضلع کے سینئر افسران اورمقامی بھاجپائی قائد دھرم سنگھ سینی (ریاستی وزیر) ممبر ان اسمبلی سنجے گرگ، مسعود اختر، نریش سینی، پردیپ چودھری سینئر سوشل رہبر اور بہوجن سماج پارٹی کے لیڈرقائد حاجی فضل الرحمان، شادان مسعود اور شاد علیخان جیسے مہذب افراد امن اور بھائی چارے کیلئے مسلسل بھائی چارہ تقریبات میں سرگرم رہتے ہوئے آپسی بھائی چارے کو مظبوطکرتے نظر آتے ہیں جو ضلع کے عوام کیلئے راحت بخش عملی کارکردگی ہے!
گزشتہ دنوں صحافی سید حسان کی دعوت ولیمہ میں ہمارے سٹی میئر اور بھاجپائی رہبر سنجیو والیا نے ہم سے ایک ملاقات میں اپنے درجن بھر کانسلرس کی موجودگی میں فرمایاکہ ایک دوسرے کے تیوہار، شادی اور گھریلو پروگرام میں شرکت کرنے سے آپسی محبتوں میں اضافہ یقینی ہے ہم ایسی تقریبات میں ترجیحی طور پر شامل رہتے ہیں میئر سنجیو والیا نے کہاکہ آپسی میل ملاپ اور ایک دوسرے کے دکھ سکھ میں شرکت کرنا ہماری گنگا جمنی تہذیب کی شاندار نظیر ہے ہم سبھی کو اس شناخت پر فخر ہے! سابق ریاستی وزیرسنجے گرگ (ایم ایل اے) نے کہا کہ ہمکو اس بھائی چارے پر رشک ہے ہم چاہتے ہیں کہ ہمارا صدیوں پرانا یہ بھائی چارہ مستقل قائم رہے! عوامی تقریبات میں ہمیشہ میئر سنجیو والیا، سنجے گرگ، ممبر اسمبلی مسعود اختر اور حاجی فضل الرحمان کی ایکساتھ موجودگی آپسی بھائی چارے پر مبنی شاندار سوشل تقریبات کامظاہرہ ثابت ہوئی ہیں اس طرح کی سوشل تقریبات لگاتار ملک کے عوام کو اخوت اور اتحاد کاپیغام دیتی رہتی ہیںیہاں ہندو مسلم جہاں ایک دوسرے سے بغلگیر ہوکر مبارکباد پیش کرتے ہیں وہیں مہذب سیاست داں اور اعلیٰ افسران بھی عوام کو بھائی چارے کی لذت سے روشناس کراتے ہیں جو بہترین حکمت عملی ہے یہ منظر دیکھ کر آپسی بھائی چارہ کو زبردست تقویت پہنچتی ہے! اکثر اہم سوشل تقریبات کے موقع پر ہمارے سینئر آئی پی ایس افسر شرد سچان ڈی آئی جی، اپیندر کمار اگروال ایس ایس پی ،پربل پرتاپ سنگھ ایس پی سٹی، مقامی ممبر اسمبلی سنجے گرگ، مسعود اختر، نریش سینی، پسپا قائد حاجی فضل الرحمان، شادان مسعود اور شاد علیخان جیسے مہذب افراد امن اور بھائی چارے پر اثر اور خوش ذائقہ الفاظ میں مہمانوں سے مخاطب ہوتے ہوئے اکثر یہ کہتے ہیں کہ ایک صحت مند انسان ہی ایک خوشحال اور ترقی یافتہ ملک کی بقاء اور سالمیت کیلئے ایک مثبت سوچ کا مظہر ہوتاہے مثبت سوچ اور فکر والا عوام ہی اپنے ملک کا اصل شہری اور ذمہ دار کہلانے کا سہی حقدار کہلاتاہے! مقامی ممبر اسمبلی سابق ریاستی وزیر سنجے گرگ نے اپنے بیباک لہجہ میں فرقہ پرستوں کی بھر پور مذمت کرتے ہوئے فرمایاکہ ہندو مسلم اتحاد ہی نہماری طاقت اور شان ہے اگر ہم آپس میں ٹکراتے رہے تتو عالم میں مزاق کا موضوع بن جائیں گے قابل قائد بھائی سنجے گرگ نے کہاکہ ہمارا ملک مختلف مذاہب ، زبانوں اور نسلوں کی کے آپسی اتحاد کے باعث آج دنیا میں عزت کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے کیونکہ آج لاکھ اختلافات کے بعد بھی ہم سب ایک تھے اور ایک ہی ہیں!