مودی جی نہیں،کسان ،نوجوان اورمزدورملک چلاتے ہیں،پندرہ لاکھ تودوردس روپیے بھی نہیں دیے شمالی ہندکے لوگوں کوگجرات میں جگہ نہیں،نو ٹ بندی نے عوام کی کمرتوڑی،’’گبرسنگھ ٹیکس‘‘ میں تبدیلی کریں گے روزگارکاوعدہ بھی جملہ ثابت ہوا،راجستھان کی انتخابی ریلی میں راہل گاندھی نے آڑ ے ہاتھوں لیا 

جے پور10 اکتوبر
راجستھان اسمبلی انتخابات کی جنگ جیتنے کے لیے کانگریس نے بھی کمر کس لی ہے۔ راجستھان کے بیکانیر میں راہل گاندھی نے مودی پر براہ راست حملہ کیا ہے ۔ کانگریس صدر راہل گاندھی نے کہا کہ مودی جی آپ اس ملک کو نہیں چلاتے ہیں، آپ کو غلط فہمی ہے۔اس ملک کو نوجوان، کسان، خواتین، مزدور، چھوٹے دکاندار چلاتے ہیں۔ وہیں مودی کے وعدوں پر بھی راہل گاندھی نے حملہ بولا اور کہا کہ مرکز میں نریندر مودی حکومت نے اور ریاست میں وسندھرا راجے حکومت نے روزگار، حقوق اور ایم ایس پی کو لے کربڑے بڑے وعدے کیے تھے۔ پی ایم مودی نے 15 لاکھ روپے ہر اکاؤنٹ میں دینے کا وعدہ کیا تھا، مگر کم سے کم پی ایم مودی نے10 روپے بھی نہیں دیئے۔گجرات میں شمالی ہندوستان کے لوگوں پر معاملے پر بھی راہل گاندھی نے مودی کو گھیرا اور کہا گجرات میں راجستھان، اتر پردیش اور بہار کے نوجوانوں کو پیٹا جا رہا ہے۔ ان سے کہا جا رہا ہے کہ آپ یہاں کے نہیں ہیں؛ لیکن پی ایم مودی نے اس پر ایک لفظ بھی نہیں بولا۔ریلی میں راہل گاندھی نے کہا کہ وزیراعلیٰ وسندھرا راجے نے چوبیس گھٹے بجلی کی فراہمی کا وعدہ کیاتھا۔ پی ایم مودی نے 2 کروڑ روزگار پیدا کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ دونوں اپنے وعدے کو پورا کرنے میں ناکام رہے۔ وہیں بی جے پی کے ’’گورو یاترا‘‘کو لے کر راہل گاندھی نے کہا کہ یہاں ’گورو یاترا ‘ تواتر کے ساتھ چل رہا ہے ۔ ہائی کورٹ نے کہا کہ اسے روکنا ہوگا کیونکہ یہ عوام کا پیسہ ہے۔بیکانیر میں راہل گاندھی نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نوجوان کوئی مفت تحفہ نہیں مانگ رہے ملک کا نوجوان روزگار مانگ رہا ہے ۔ نوجوان چین سے مقابلہ کرنا چاہتا ہے، نوجوان چاہتا ہے ملک میں فیکٹری بنے اور اس فیکٹری میں ملک کے لیے کام کرنے کو ملے۔انہوں نے کہا کہ نوٹ بندی کا ہم کچھ نہیں کر سکتے لیکن ہم گبر سنگھ ٹیکس کو بدل کر سچی جی ایس ٹی کرکے دکھائے گا۔ پورا بیکانیر ایک آواز میں کہہ رہا ہے کہ نوٹ بندی گبر سنگھ ٹیکس نے ہمیں برباد کر دیا، ہمارا نقصان ہوا