جماعت اسلامی ھند مہاراشٹر کی ریاست گیر ہفت روزہ نشہ مخالف مہم ’’نشہ کا ناش دیش کا وکاس‘‘کا آغاز 2 اکتوبر سے۔

جماعت اسلامی ھند مہاراشٹر کی ریاست گیر ہفت روزہ نشہ مخالف مہم ’’نشہ کا ناش دیش کا وکاس‘‘کا آغاز 2 اکتوبر سے۔
جماعت اسلامی ہند و نشہ بندی منڈل مہاراشٹر کی جانب سے منعقد کردہ پریس کانفرنس میں ذمہ داران کا اظہار خیال
ریاست کے نوجوانوں کو ہر قسم کے نشیلی چیزوں کے استعمال سے بچانے کے لیے جماعت اسلامی ہند مہاراشٹر ، نشہ بندی منڈل مہاراشٹر کے تعاون و اشتراک سے 2 تا 8 ؍اکتوبر2018ء ؁ ریاست گیر نشہ مخالف مہم ’’ نشہ کا ناش دیش کا وکاس ‘‘ کا انعقاد کرے گی ۔
آج ۲۸ ستمبر ۲۰۱۸ کو مراٹھی پترکار سنگھ ممبئی میں پریس کانفرنس کا انعقاد کیا گیا ، پریس کو مخاطب کرتے ہوئے مظہر فاروق ، سکریٹری جماعت اسلامی ھند مہاراشٹر نے موجودہ صورت حال کو سامنے رکھتے ہوئے مہم کا تعارف پیش کرتے ہوئے بتایا کہ نوجوان ہماری طاقت ہے، انسانی وسائل کسی بھی ترقی کے لیے لازمی جزو ہے۔ اگر ہم اپنے نوجوانوں کو منشیات کے استعمال سے روک سکیں تو بڑے پیمانے پر ہمارے سماج کی معاشی ترقی کے لیے کارگر ثابت ہوں گے۔ اسی لیے ہم نے اس مہم کا عنوان ’’نشہ کا ناش ۔ دیش کا وکاس‘‘ طے کیا ہے۔
جماعت اس مہم کے ذریعے سے ریاست مہاراشٹر میں شراب پر مکمل پابندی کا مطالبہ کرتی ہے۔ اس مہم ’’نشہ کا ناش۔ دیش کا وکاس‘‘ کے ذریعے اور اُس کے بعد بھی ہم نوجوانوں کو نشے کی لت سے بچنے، بچانے اور اُن کی بحالی و ترقی کی جانب گامزن کرنے کے لیے کوشش کرتے رہیں گے۔
جماعت اسلامی ہند ممبئی کے سکریٹری ہمایوں شیخ نے ممبئی میں بڑھتے منشیات کے استعمال اور تعلیمی اداروں و پسماندہ بستیوں کی صورتحال پیش کی اور تمباکو، گٹکا سے اسکول وکالجس کروانے اور ممبئی میں مہم کے موقع سے مختلف سرگرمیاں انجام دینے کی بات کہی۔
نشہ بندی منڈل مہاراشٹر کے سکریٹری امول مڈامے نے اب تک نشہ بندی منڈل کی منشیات کے خلاف کی گئی سرگرمیوں کو پیش کیا ، اور بتایا کہ صرف منشیات پر پابندی لگانے سے کچھ نہیں ہوگا پابندی لگنی چاہیے لیکن ساتھ ہی ہمیں عوام میں بیداری لانی ہوگی اور انہیں نشہ کے خلاف کھڑے کرنا ہوگا۔
محمد اسلم غازی (صدر APCR مہاراشٹر) نے بتایا کہ WHO کی رپورٹ کے مطابق دنیا میں تمباکو ڈرگس کے استعمال سے سالانہ سترّ لاکھ سے زیادہ لوگوں کی اموات ہوتی ہے اور ہندوستان میں ڈرگس کے استعمال سے سالانہ دس لاکھ لوگ موت کا شکار ہوتے ہیں۔
ہمارے ملک عزیز میں شراب کی وجہ سے دیہی و شہری علاقوں میں سماج کو بڑا نقصان پہنچا ہے۔ ایک طرف تو حکومت نشہ کو روکنے کے لیے ایک خطیر رقم خرچ کررہی ہے اور وہیں دوسری طرف شراب بنانے، بیچنے اور پینے کے لیے لائسنس بھی جاری کرتی ہے۔ ٹی بی ، کینسر اور دیگر جان لیوا بیماریاں نشے کی وجہ سے ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ بہت سے لوگوں کی اموات سڑک حادثات میں شراب پی کر ڈرائیونگ کرنے کی وجہ سے ہوتی ہے۔ اسی نشہ کی وجہ سے سینکڑوں ہزاروں خاندان ٹوٹ گئے ہیں۔ ملک میں تشدد میں بھی اضافہ ہورہا ہے اور خواتین میں خودکشی کا رجحان بڑھ گیا ہے۔
جماعت اسلامی ھند مہاراشٹر ، AINA اور مہاراشٹر نشہ بندی منڈل کے کمیٹی کی ممبر ہے ، اور اس طرح کی تمام تنظیموں ، اداروں ، این جی اوزکے اشتراک سے نشہ کی لت سے نوجوانوں کو چھڑانے کے لیے کوشاں ہے۔اورجماعت اسلامی ہند مہاراشٹر کی مقامی شاخیں (مدنپورہ، کرلا، مالونی، میرا روڈ، ممبرا، اورنگ آباد، ناندیڑ، آکولہ، امراؤتی، پونہ وغیرہ) پسماندہ بستیوں ، اسکول، کالجز میں نشہ کے نقصانات سے بیداری کے لیے مختلف پروگرامس ، نمائشیں، ریلیوں کا انعقاد کررہی ہے۔
مہم کے دوران پورے مہاراشٹر میں درج ذیل سرگرمیاں انجام دی جائیں گی:
(1) ممبئی میں مہم کا افتتاحی پروگرام منعقد کیا جائے گا۔
(2) ریاست کے بڑے شہروں میں پریس کانفرنسیس لیے جائیں گے۔
(3) عوام میں بیداری کے لیے کارنر میٹنگیں ، ریلیاں، خطاباتِ عام کا انعقاد کیا جائے گا۔
(4) اسکول ، کالجز میں طلباء، اساتذہ و الدین کے لیے مختلف پروگرامس منعقد کیے جائیں گے۔