حضرت مولانا الیاس ندوی صاحب* *جنرل سیکرٹری ابو الحسن علی ندوی اسلامک اکیڈمی بھٹکل*

11 ستمبر 2018

*کل دار العلوم ندوۃالعلماء کی مجلس تحقیقات و نشریات کے میٹنگ ھال میں حضرت مولانا الیاس ندوی بھٹکلی کی خاص گفتگو ہوئ،* جسمیں مولانا نے حالات حاضرہ پر روشنی ڈالتے ہوئے ایک بہت اہم بات بیان فرمائی، کہ *پہلے یہ ہوتا تھا مسلم لڑکیاں غیر مسلم لڑکوں کو اپنی طرف کھینچ لیتی تھی، لیکن آج ہماری مسلم بہنیں غیر مسلموں کے ساتھ رشتہ ازدواج میں منسلک ہورہی ھیں، اور پھر وہ اُنہیں کے طرز پر زندگی گزار رہی ہیں،* گزشتہ دنوں الگ الگ صوبوں میں اس طرح کے سیکڑوں واقعات ھمارے سامنے آئے،یہ سب ان کے والدین کے ایمان کی کمزوری اور اسلام بنیادی معلومات نہ ہونے کی وجہ سے ہو رھا ہے،

*اس موضوع کو لیکر دہلی میں جمعیت علماء کی میٹنگ 5 ستمبر کو ہوئ، جسمیں مولانا کو شرکت کی دعوت دی گئی،* میٹنگ میں تقریباً 9 صوبوں سے 20 سے زائد علماء کرام اور غیر جمعیت کے لوگ بھی تشریف لائے، *مشورہ میں مولانا محمود مدنی صاحب کے سامنے بہت سی اہم باتیں آئیں کہ کیسے ان چیزوں پر روک لگائ جائے؟* ہر ایک نے اپنی اپنی رائے کا اظہار کیا،

*لیکن حضرت مولانا الیاس ندوی صاحب نے دو تین تجویزیں پیش کیں، وہ واقعی قابل عمل ہیں ،* (اگر ان پر اب ہم عمل پیرا نہ ہوئے تو سیلاب رکنے والا نہیں ہے، اسی طرح ھماری مسلم بہنیں غیروں کا گھر آباد کرکے خود کو برباد کرتی رہیں گی،) *ان میں سے ایک تجویز یہ ہے کہ اسکولس اور کالجس میں جو بچیاں تعلیم حاصل کر رہی ہیں، یا پڑھ کر فارغ ہو چکی ہیں،یہ مدرسہ کے نام پر قیامت تک نہیں آئیں گی، گھر میں یا باہر اپنے Lover کے ساتھ وقت گزاری کرکے چار سال گزار دیں گی لیکن چار گھنٹے کے لئے دینی مدرسے کے نام پر نہیں آنے والی ہیں، بہرحال ہیں تو ہماری بہنیں اور بیٹیاں ، ان تک دین اسلام کی بنیادی باتوں کو پہچانا ہماری ذمہ داری ہے، اسکا بہتر طریقہ یہ ہے کہ ان کے سامنے مدرسہ یا جامعہ کا نام نہ لیا جائے اور نہ کسی چیز کا پابند کیا جائے، ابوالحسن علی ندوی اسلامک اکیڈمی کی طرف سے ایک نصاب دیا جائے، کہ آئیے ہفتہ میں روز ایک گھنٹہ دیجئے کسی وقت بھی آیئے اور کسی بھی لباس میں آیئے، اب ان آنے والی اسکولی بالغ بچیوں میں چار کا ایک بیچ بنادیاجائے اور چار کو ایک ہی معلمہ ایک گھنٹہ تک پڑھائے، اور ان سے مناسب(250_300) فیس بھی لی جائے جو معلمہ ہی کو دیدی جائے، ایک ہفتہ کے بعد پوچھے، آگے اور وقت دینا چاہو تو آپکو اختیار ہے، اس طرح مکمل 40 دن کا کورس پورا کرادے،انشاء اللہ اسلام کی بنیادی معلومات حاصل کرکے وہ عقائد عبادات اور معاملات کسی حد تک درست کر لیں گی،*

الحمد للہ مولانا نے یہ نصاب بھی(اسلام کی بنیادی تعلیمات) اردو میں تیار کردیا ہے، اور ھندی انگریزی میں بھی اس پر کام ہورہا ہے، *اس کے لئے جمعیت ایک کمیٹی بنائے اور ملک کے تمام صوبوں اسکو نافذ کرے، اور یہ ابو الحسن علی ندوی کی نسبت کرکے حسینیہ اسلامک اکیڈمی کے نام قائم کرے،*

*مولانا محمود مدنی صاحب نے اس کام شروع کروا دیا ہے،* ساتھ ساتھ ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ جتنا بس میں ہو کریں تو انشاءاللہ کام ہو سکتا ہے، اور ہماری مسلم بہن بیٹیاں اس الحاد ودہریت کے راستے بچ سکتی ہیں جو ان کے لئے کھل چکا ہے.

آپ کے چھوٹے بھائی نے مولانا کی گفتگو کو مختصراً اپنی ڈائری میں قلمبند کرنے کوشش کی ہے اللہ سبحانه وتعالى قبول فرمائے.

*آپ بھائی: محمدخادم ندوی*
*جامعہ سودہ للبنات میرمئو* *ردولی فیض آباد 225407*