دنیوی علوم و فنون میں نسل نو کا ماہر ہونا ضروری! یعقوب بلند شہری

دنیوی علوم و فنون میں نسل نو کا ماہر ہونا ضروری! یعقوب بلند شہری
سہارنپور8؍ستمبر(احمد رضا) آل انڈیا دینی مدارس بورڈ کے ذریعہ چلائی جارہی تحریک تعلیم کو عام کیجئے کے تحت ایک جماعت ۷؍افرادپر مشتمل گنگوہ پہنچی جس کا استقبال گنگوہ میں مفتی شعیب مظاہری نے کیا اور اس کے بعد کنڈہ جدیدگئے جہاں مدرسہ فیض ہدایت محمدی کی جامع مسجد میں بعد نماز جمعہ بورڈ کے قومی صدر مولانا محمد یعقوب بلندشہری کا علم کی فضیات کے سلسلہ میں اہم خطاب ہواجس میں انہوں نے قرآن و حدیث اور دینی تعلیم کے ساتھ ساتھ دنیوی علوم و فنون میں نسل نو کا ماہر کرنا ضروری بتلایا ہے چاہے ماں باپ کو اس کے لئے کتنی ہی بڑی قربانی دینی پڑے ۔جمعہ کی نماز کے بعدیہ تعلیمی جماعت موضع بسی کوہوتے ہوئے کنڈہ کلاں کے بڑے ادارہ مدرسہ اسلامیہ عربیہ محمدیہ میں پہنچی وہاں کے ذمہ دار حا فظ عبدالستاراور وہاں کے تمام مدرسین سے فروغ تعلیم کے سلسلہ میں کافی غورو خوض ہوا ۔پھر اس گاؤں کی بڑی مسجد ،مسجدعمر میں عصر کی نماز کے بعد بیان ہو ا۔جس میں مولانا بلند شہری نے انسان کی تخلیق کے مقصد پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ آج ہر کام میں کوالٹی کا دور ہے۔ مسلمانوں کے سامنے یہ ایک بہت بڑا چیلنج ہے کہ وہ علم میں کوالٹی پیدا کریں کہ نئی نسل کو جہاں حافظ قرآن ، عالم دین بنانا ضروری ہے وہیں پر ماہر ڈاکٹر ، انجینیر ، ماسٹراور فلاسفر بنانا بھی وقت کا اہم تقاضاہے مولانا بلند شہری کہاکہ مسلمان کو پھلدار درخت کے مانند بننا پڑیگا ،ملک وملت کی خدمت کے قابل بننا پڑیگا تاکہ برادران وطن کے ساتھ ساتھ اعلیٰ خدمت انجام دے سکیں۔ انہوں نے نوجوانوں سے کہا کہ اپنے گاؤں میں ایک ایسی ٹیم بناؤ جو تما م بچوں کی لسٹ تیارکرے اور دیکھں کہ گاؤں کے کتنے بچے تعلیم سے دور ہیں ان کے تعلیم کا انتظام کریں۔ اور کس بچہ کی تعلیم میں کیا رکاوٹ ہے اس کو دور کرنے کی کوشس کریں۔ دعائیہ کلمات کے بعد یہ تعلیمی جماعت چندپورہ پہنچی ، بعدنماز مغرب بستی کے پردھان شمع دین و دیگر ذمہ داران حضرات کو جمع کرکے تعلیم کو بڑھاوا دینے کے سلسلے میں گفتگو ہوئی ۔واپسی میں گنگوہ کے مشہور ادارہ مدرسہ اشرف العلوم رشیدی میں یہ تعلیمی جماعت پہنچی ۔ وہاں کے مہتمم مفتی محمد خالد سیف اللہ سے فروغ تعلیم کے سلسلہ میں مفید مشورے ہوئے اور ان سے دعاء و سرپرستی کی درخواست کی گئی۔ اس کے بعد تعلیمی جماعت جامعۃ الطیبات سہارنپورواپس آ گئی ۔ اس تعلیمی جماعت میں جامعہ الطیبات کے شیخ الحدیث مولانا محمد یعقوب سیتاپوری،جامعہ کے ناظم تعلیمات مولانا ریاض الاسلام قاسمی،مولاناسعود الظفر،صوفی شاہ دین او رفیروز عالم وغیرہ شریک رہے !