مسلمانان ممبئ ومہاراشٹر منگل 5 جون سے اعتکاف کریں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔خادم القرآن والسنہ محمدشاہد الناصری الحنفی ۔ بانی وصدرادارہ دعوتہ السنہ مہاراشٹرا ۔ ومدیرماہنامہ مکہ میگزین ممبئ

اعتکاف ایک اہم عبادت ہے، اور رمضان المبارک کے آخری عشرہ کا اعتکاف سنت مؤکدہ علی الکفایہ ہے، جو 20 ویں روزہ کے غروب آفتاب سے قبل ہی پوری تیاری کے ساتھ مسجد میں دس روز کے اعتکاف کی نیت داخل ہونے پر شروع ہوجاتا ہے،
اس مرتبہ رمضان المبارک کے چاند کے اختلاف کی وجہ سے اعتکاف جیسی اہم عبادت کے انجام دینے والے شش و پنج کا شکار ہیں، واضح رہے کہ پورے ہندوستان۔کے تمام بڑے بڑے علماء کامتفقہ فیصلہ ہے کہ پورے ملک ہندوستان کامطلع ایک ہے اورتقریبا خودساختہ جتنی بھی چاندکمیٹیاں ہیں ان میں سے اکثر کا مطمح نظر بھی ہندوستانی علماء وفقہاء کے اسی متفقہ فیصلہ کے مطابق ہے اوروہ تسلیم کرتے ہیں کہ مطلع واحد ہے۔ پھرنہ جانے کیوں ابھی تک جامع مسجد ممبئ کی ہلال کمیٹی نے اپنے غلط آراء وفکر سے رجوع نہیں کیا ۔ اس لئے ہرعلاقہ کے متدین علماء نے یہ فیصلہ کیاہے کہ امت کے اجتماعی عمل صالح اعتکاف مسنون اورلیلتہ القدر کی عبادت کو ضائع کرنے سے بچایا جائے چنانچہ بھساول کے علماء نے امت کی رہنمائ کافیصلہ کرتے ہوئے جامع مسجدہلال کمیٹی کےفیصلوں کورد کرنے کااعلان کردیاہے ۔
لہذا مسلمانان ممبئ ومہاراشٹرا سے اپیل کی جاتی ہے کہ وہ بروز منگل 5 جون کو 20 رمضان المبارک تسلیم کرتے ہوئے مکمل انشراح قلب کے ساتھ بغیرشش وپنج کے اعتکاف شروع فرمالیں ۔ ان شاء اللہ یہ معتکفین حضرات اوروہ سارے لوگ جو جمعرات کویکم رمضان المبارک تسلیم کرتے ہیں یاکریں گے یاکرچکے ہیں وہ سب کے سب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے فرمان کےمطابق سواداعظم کےساتھ شامل ہیں ۔
امید ہے کہ تمام مسلمان پوری قوت فکری ودلجمعی کے ساتھ منگل 20 رمضان المبارک کواعتکاف کیلئے اپنے اپنے علاقوں کی مساجد میں داخل ہوجائیں ۔اوراللہ سبحانہ کے حضوراپنی جبین نیاز دس روز کیلئے یکسوئ کے ساتھ خم کردیں ۔
اطلاعا عرض ہے کہ ممبئی کی ہلال کمیٹی کے مطابق پورے ملک کا مطلع ایک ہے، جو رویت ہلال کمیٹی جامع مسجد ممبئی کے دستور میں موجود ہے،۔ وماتوفیقی الا باللہ علیہ توکلت والیہ انیب ۔۔