ہماری سرکار میں قانون کی برتری قائم ہے! بڑ بولے ڈپٹی چیف منسٹر موریہ کے جھوٹ کا پلندہ

سہارنپور ( احمد رضا) بھاجپاکے ریاستی نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ چناؤ ی تشہیر کیلئے گزشتہ سال ۲۰۱۷ کے اسمبلی چناؤ کے درمیان مغربی اضلاعکے دورے پر یہاںآئے تب بھی ہم نے انسے کتنی ہی مرتبہ یہ پوچھا تھاکہ کیا بھاجپا ایک طبقہ کی جماعت ہے ؟ تو آپنے صاف کہاتھا کہ بھاجپا بڑی سوچ والی جماعت ہے اور سبھی کو ساتھ لیکر چلنے پر یقین رکھتی ہے ریاستی اسمبلی میں بھاری اکثر یت کے ساتھ واپس آ نے پر بھاجپا کے ریاستی نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ کل شام جب یہاں دوسری مرتبہ اپنے خاص پروگرام کیلئے آئے تب بھی ہم نے کیشو پرساد موریہ سے وہی سوال دوہرایا تو کیشو پرساد موریہ نے کہاکہ انکو عوام نے جس قدر تعاون ،حمایت اور ہمت دی ہم اسکو دل سے تسلیم کرتے ہیں اور یہی ہماری سرکار کی بہتری اور مقبولیت کا راز ہے ہم سبھی کا بھلا کر رہے ہیں ! ریاست میں بھاری طاقت کے ساتھ سرکار چلانیکے بعد بھی بغیر کسی تکبر اور تعصب کے بھاجپا کے سینئر قائد کیشو پرساد موریہ نے کل شام کھلے طور پر اردوپریس سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ ہم سبھی کا بھلا چاہتے ہیں اور بھاجپا ایک بڑی جماعت ہے ہماری سوچ یہی ہیکہ ہماری پارٹی کسی ایک طبقہ کو نہی بلکہ ملک کے سبھی طبقوں کے عوام کو برابری کا شہری مانتے ہوئے انکے لئے فلاحی کام کر رہی ہے سبھی کے ساتھ ہمارے رشتہ بہتر ہیں ہماری مرکزی سرکار بھی سبھی کو برابر کا احترام دے رہی ہے سبکا ساتھ سبکا وکاس ہی ہمارا نعرہ ہے یاستی سطح پر بھاجپاکی قانون پر مبنی سرکار گزشتہ گیارہ ماہ سے بہتری کیساتھ آگے بڑھتی جارہی ہے اپنی سرکار مضبوطی کو بھاریہ عوام کی جیت قرار دیتے ہوئے اپنے عوام کا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا !
بھاجپاکے ریاستی نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ نے پارٹیکو ۲۰۱۹ میں ملنے والی بڑی جیت پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ہم بہتر اور صاف ستھری سیاست پر یقین رکھتے ہیں چھل کپٹ سے بھاجپا ہمیشہ دور رہتی ہے بھاجپا کے ریاستی ڈپٹی وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ نے اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ یہ لوک سبھا چناؤ میں ہم سو میں ساٹھ فیصد فتح یابی حاصل کرنے جارہے ہیں باقی چالیس میں سبھی جماعتیں شریک ہوں گی ہم لوک سبھا چناؤ اپنے وزیر اعظم مودی کی زیر سرپرستی بھاری اکثریت سے جیتنے جارہے ہیں آپنے کہاکہ سماجوادی اور بہوکن سماج پارٹی مودی سرکار کو ہلا ہی نہی سکتی یہ دونوں جماعتیں موقع پرست اور مفاد پرست سوچ کی حامل ہیں ووٹر کافی ہوشیار ہے وہ انکے بہکاوے میں آنے والانہی ہے!ریاستی ڈپٹی وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ نے اپنے بیان کے دوران قومی یکجہتی پر رائے زنی کرتے ہوئے کہا کہ میں جب سے ڈپٹی وزیر اعلیٰ بناہوں تب سے بغیر کسی امتیاز کے ہندو مسلم سکھ اور عیسائی سبھی لوگوں کے کام صاف نظریہ سے انجام دیتا آرہاہوں اپنے گروپ میں موجود دو اعلٗی تعلیم یافتہ مسلم نوجوانوں کی بابت آپنے صاف کہاکہ نے میرے صوبہ میں بڑی مسلم آبادی ہے مسلم فرقہ کے بہت سے لوگ کبھی بھی کسی کام کے لئے اگر ہمارے پاس آتے ہیں اور ہم انکا کام کرتے ہیں آپنے کہاکہ ہمیں اپنے علاقہ کے عوام کی مدد کرنے میں سکون ملتاہے!
سہارنپور لوک سبھا سیٹ سے بھاجپاکے ایم پی بھائی راگھو لکھن پال شرما نے بیباک لہجہ میں کہاکہ ہمارے لین دین، تعلیمی معاملات اور سوشل کام ایک دوسرے کیتعاون کے بغیر مشکل ہیں اور صدیوں سے اس ملک کے عوام اسی طرح سے کام کاج سہی روپ میں کرتے آرہے ہیں اور ہماری آپسی تہذیب اور بھائی چارے کا یہ شاندار سلسلہ آج بھی جاری ہے ہمارے ممبر لوک سبھا راگھو لکھن پال شرما نے کہاکہ بھاجپا اقلیتی فرقہ کا ہمیشہ سے ہی ادب و احترام کرتی آرہی ہے اور ہمیشہ انکواپنا رفیق مانتی ہے بھاجپاکے ایم پی بھائی راگھو لکھن پال شرما نے کہاکہ بلا تحقیق افواہ اڑانے اور نفرت پھیلانے والے غیر سوشل عناصر سے بچ کر ہم سبھی کو مل جل کر اپنے اور اپنے ملک کے وقار اور وجود کو بنائے رکھناہے بس آج یہی ہماری بڑی ذمہ داری ہے بھاجپاکے ممبر لوک سبھا راگھو لکھن پال شرمانے ایک سوال کے جواب میں بتایاکہاس بار چناؤ میں ہمارا سیدھا مقابلہ ہمارے ترقیاتی اورمسبت سوچ رکھنے والے امید واروں کا جرائم اور سچائی کو جھٹلانے والوں کے ساتھ ساتھ اسلئے ہمیں یقین تھا کہ سبھی کا خاص طور سے اقلیتی فرقہ کا ووٹ بھی ہمکو ہماری ترقیاتی اورمسبت سوچ کے سبب ملیگا اور وہی ہوا ہمیں ہر طبقہ کا ووٹ ملاہے یہی بھاجپاکی مقبولیت کا راز ہے آپنے کہاکہ ہندو مسلم اختلافات کی باتیں اڑانے والے عوام کے دشمن اور موقع پرست سیاست داں ہیں عوام کو اس طرح کے عناصر سے بچناہوگا،بھاجپاکیسینئر قائد شرما نے یہ بھی کہاکہ بھاجپا کے ساتھ ملک کے کروڑوں مسلم عوام جڑے ہوئے ہیں دہلی ، ممبئی، بنگلور، چندیگڑھ اور بھوپال جیسے اہم شہروں کے عوام ہمیں پسند کرتے ہیں ا ور ہم اپنے سبھی کارکنا ن اور لیڈران کا ہمیشہ ہی احترام کرتے آئے ہیں آپنے کہاکہ ہمارے درمیان بھرم پھیلانے والے لوگ ہی قوم اور ملک کی ترقی کے دشمن ہیں؟